The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

ہسپتالوں میں دوران علاج غیر محفوظ نظام کے ذریعے دنیا بھر میں سالانہ 134ملین افراد متاثر ہوتے ہیں، … ترجمان پمز ڈاکٹر وسیم خواجہ کا ’’عالمی یوم تحفظ مریضان‘‘ کی تقریب … مزید

4

ترجمان پمز ڈاکٹر وسیم خواجہ کا ’’عالمی یوم تحفظ مریضان‘‘ کی تقریب سے خطاب

جمعرات ستمبر
15:34

ہسپتالوں میں دوران علاج غیر محفوظ نظام کے ذریعے دنیا بھر میں سالانہ ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 17 ستمبر2020ء) عالمی ادارہ صحت کے اعلان کے مطابق پاکستان میں ’’عالمی یوم تحفظ مریضان‘‘ جمعرات کو منایا گیا، اس دن کو منانے کا بنیادی مقصد ہیلتھ پروفیشنل کو دوران علاج مریض کے تحفظ کو یقینی بنانے اور انہیں کسی بھی نقصان سے بچانے کیلئے آگاہی فراہم کرنا ہے۔اس ضمن میں پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز ہسپتال میں تقریب کا اہتمام کیا گیا۔ اس مو قع پر پاکستان انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کے ترجمان ڈاکٹر وسیم خواجہ نے کہا کہ ہسپتالوں میں دوران علاج غیر محفوظ نظام کے ذریعے دنیا بھر میں سالانہ 134ملین افراد متاثر ہوتے ہیں جس میں سے سالانہ 2.6 ملین افراد کی موت واقع ہوتی ہے۔ دنیا بھر میں ہونے والی اموات اور معذوری کی دسویں بڑی وجہ دوران علاج مریض پر مرتب ہونے والے مضر اثرات ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ہسپتالوں میں استعمال ہونے والی25 فیصد سرجیکل آلات غیر محفوظ ہوتے ہیں۔ پارلیمانی سیکرٹری برائے صحت نوشین حامد کاکہنا تھا کہ نظام صحت کو بہتر بنانے کیلئے مریضوں کے تحفظ کو یقینی بنانا انتہائی ضروری ہے،آج ہسپتالوں میں مریضوں کو تحفظ نہ ملنے کے باعث لوگ ہسپتال جانے سے گھبراتے ہیں،لوگوں کا خیال ہے کہ جس مرض کے علاج کیلئے جاتے ہیں دوسری بیماری ہسپتال سے ساتھ لیکر آتے ہیں،مریضوں کے تحفظ کا عالمی دن منانا ایک اہم پیشرفت ہے، اس دن کو منانے سے ڈاکٹروں اور عملہ میں مریضوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کا احساس اور شعور اجاگر ہوسکے گا۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More