The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

گوجرانوالہ میں اپوزیشن پورے پاکستان سے لوگوں کو اکٹھا کر کے لائی مگر خیبر پختونخوا سے کوئی بڑا جلوس نہیں گیا،شوکت یوسفزئی … عوام نے پی ڈی ایم کے اچار کو مسترد کردیاہے۔ … مزید

10

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 17 اکتوبر2020ء) صوبائی وزیر محنت و ثقافت شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ گوجرانوالہ میں اپوزیشن پورے پاکستان سے لوگوں کو اکٹھا کر کے لائی مگر خیبر پختونخوا سے کوئی بڑا جلوس نہیں گیا۔عوام نے پی ڈی ایم کے اچار کو مسترد کردیاہے۔ خیبرپختونخوا کے عوام نے ہمیشہ عمران خان پر اعتماد کیا ہے اور آج وزیراعلیٰ محمود خان کی پالیسیوں پر اعتماد کا اظہار کردیا ہے۔ شوکت یوسفزئی نے کہا کہ پچھلے پانچ سال پی ٹی آئی کی حکومت رہی اور بہترین کارکردگی پر دوسری مرتبہ دو تہائی اکثریت کے ساتھ حکومت بنانے میں کامیاب ہوئی۔ بلاول کہتے ہیں عوام کا سیلاب اسلام آباد لے کر جائیں گے۔ کیا کراچی ڈوب جانے سے کلیجہ ٹھنڈا نہیں ہوا۔ مریم کہتی ہے حکومت کو گھر بھیج کر دکھائیں گے۔

(جاری ہے)

اتنی ہمت اور طاقت ہے تو پہلے اپنے پاپا کو تو لندن سے لاؤ، حکومت گرانا بچوں کا کھیل نہیں۔

پہلے قوم کو تو بتائیں کہ چور چور کہنے والے بھائی بھائی کیسے بن گئے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنی رہائش گاہ پر ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔صوبائی وزیر نے کہا کہ جلسوں سے کرپشن نہیں چھپائی جا سکتی۔ یہ کرپٹ ٹولہ ہے جن کا مقصد مہنگائی نہیں اداروں کو ٹارگٹ کرنا ہے۔ قوم اپنے اداروں کے ساتھ کھڑی ہے۔ انہوں نے کہا کہ موروثی سیاست نے ملک کو تباہی کے دھانے پر کھڑا کیا۔ آج مولانا فضل الرحمان صاحب اور زرداری صاحب کا بیٹا اور نواز شریف کی بیٹی خاندانی سیاست کا حصہ ہیں۔صوبائی وزیر نے کہا کہ پی ڈی ایم کے پہلے جلسے میں ہی ان کے ورکر آپس میں لڑ پڑے ہیں۔آپوزیشن کی پالیسیاں بہتر ہوتیں تو آج مہنگائی نہ ہوتی۔ مہنگائی کا حل بھی عمران خان نکالے گا۔شوکت یوسفزئی نے کہا کہ گلگت بلتستان کے آنے والے انتخابات میں بھی عمران خان کی کامیابی یقینی ہے جبکہ سینیٹ الیکشن میں بھی پاکستان تحریک انصاف کو کامیابی نصیب ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن بوکھلاہٹ کا شکار ہے۔ ان پر نیب کی تلوار لٹک رہی ہے اور وہ احتساب سے بچنے کی کوشش کر رہے ہیں۔شوکت یوسفزئی نے کہا کہ نواز شریف لندن میں بیٹھ کر قومی اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی نہ کریں اگر ہمت ہے تو پاکستان آکر اپنے اوپر لگے کرپشن کا جواب دیں۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان پہلے ہی اسمبلی سے باہر ہیں اب ان کی مرضی کہ وہ سڑکوں پر نکلیں یا جنگلوں میں جائیں مگر اسمبلی میں دوبارہ جانے کا خواب ان کا کبھی پورا نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کی خوش قسمتی ہے کہ مسلم لیگ اور پیپلز پارٹی کے پاس کوئی لیڈر شپ ہی نہیں۔ ایسے میں ان کی لاٹری نکلی ہے۔ اچھے اچھے کھانوں کے مزے لیں۔ حکومت گرانے کی باتوں سے ان کا ہاضمہ خراب ہو سکتا ہے۔شوکت یوسفزئی نے کہا کہ اپوزیشن چاہتی ہے کہ ان کو این آر او ملے اور عمران خان احتساب کا عمل بند کر دیں۔ عوام نے تحریک انصاف کو کرپشن ختم کرنے اور لوٹ مار کرنے والوں کے خلاف موثر کاروائی کرنے کیلئے ووٹ دیا ہے وہ کبھی بھی کرپٹ لوگوں کے ساتھ سمجھوتہ نہیں کریں گے۔ شوکت یوسفزئی نے کہا کہ کوئی بھی تحریک احتساب کے عمل کو نہیں روک سکتی۔ پی ڈی ایم کا کوئی ایجنڈا نہیں یہ صرف کرپشن بچانے کے لئے میدان میں نکلے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے جب تحریک شروع کی تھی تو اس وقت ان کے پاس پانامہ اور دھاندلی جیسے ایشوز تھے لیکن آج بلاول اور مریم صفدر اپنے والد کو کو بچانے کے لئے میدان میں آئے ہیں۔صوبائی وزیر شوکت یوسفزئی نے کہا کہ اپوزیشن کو جلسے جلوس کرنے کی کھلی چھٹی دی ہے تاہم کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ عوام کو احتجاج کیلئے نکالنا اپوزیشن کی ذمہ داری ہے اگر عوام ان کا ساتھ نہیں دے رہی تو اس کا غصہ سیکورٹی اداروں پر نہ نکالا جائے۔عوام ان کی ماضی کی پالیسیوں سے مایوس ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More