The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

کورونا وائرس کی شدت کم ہونے اورڈھانچہ جاتی اصلاحات سے پاکستانی معیشت کی وسیع تربحالی کاامکان ہے، جاری مالی سال میں پاکستان کی معیشت کی بڑھوتری کی شرح 2.6 فیصد اورآنیوالے … مزید

6

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 15 ستمبر2020ء) ایشیائی ترقیاتی بینک (اے ڈی بی) نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی وبا کی شدت کم ہونے اورڈھانچہ جاتی اصلاحات بحال ہونے کی وجہ سے جاری مالی سال کے اختتام پرپاکستانی معیشت کی وسیع تربحالی کاامکان ہے، جاری مالی سال میں پاکستان کی معیشت کی بڑھوتری کی شرح 2.6 فیصد اورآنیوالے سال میں 3.2 فیصد رہنے کی توقع ہے۔ یہ بات ایشیائی ترقیاتی بینک کی جانب سے جاری کردہ ایشئین ڈویلپمنٹ آوٹ لک نامی رپورٹ میں کہی گئی ہے۔رپورٹ میں گزشتہ مالی سال میں پاکستان کی اقتصادی بڑھوتری کی شرح منفی صفراعشاریہ چار، جاری مالی سال میں 2.6 فیصد اورآنیوالے سال میں 3.2 فیصد رہنے کی پیشنگوئی کی گئی ہے۔ اپریل 2020 میں ایشیائی ترقیاتی بینک نے جاری مالی سال میں پاکستان کی معیشت میں 2 فیصد بڑھوتری کی پیشنگوئی کی تھی۔

(جاری ہے)

رپورٹ میں کہاگیاہے کہ اشیائے خوراک کی قیمتوں میں اضافہ کی وجہ سے مالی سال 2019 مین افراط زرکی شرح 6.8 فیصد رہی جو گزشتہ مالی سال میں 10.7 فیصد تک پہنچ گئی تاہم جاری مالی سال میں افراط زرکی شرح 7.5 فیصد تک کم ہونے کی پیشنگوئی کی گئی ہے۔درآمدات اورتیل کی قیمتوں میں کمی اورمقامی کرنسی کی قدرکم کرنے سے حسابات جاریہ کے خسارہ میں نمایاں کمی آئی ہے، افراط زرکادباؤکم ہونے کی وجہ سے سٹیٹ بینک آف پاکستان نے مارچ سے لیکرجون2020 تک کی مدت میں پالیسی ریٹ میں 625 بیسس پوائنٹس کی کمی کی ہے۔سٹیٹ بینک نے معیشت کوسہارا دینے کیلئے دیگرمعاونتی اقدامات بھی اٹھائے ہیں۔ پاکستان میں ایشیائی ترقیاتی بینک کی کنٹری ڈائریکٹرژیاوہانگ ینگ نے بتایا کہ پاکستان نے کووڈ۔19 سے پیداہونے والی صحت اورمعیشت کے دونوں چیلنجوں پر قابو پانے میں قابل ذکرکامیابی حاصل کی ہے۔ تجارتی سرگرمیوں کی بحالی کے بعدپاکستان کی معیشت استحکام اوربحالی کی نشاندہی کررہی ہے۔انہوں نے کہاکہ کوروناوائرس کی وبا کے اثرات کوکم کرنے کیلئے پاکستان کی حکومت نے 1200 ارب روپے سے زائد کا ریلیف پیکج دیا جس کے تحت یومیہ مزدوروں اورکم آمدنی والے گھرانوں کو مالی معاونت فراہم کی گئی،گندم کی خریداری کاعمل تیزکردیاگیا، صحت اورخوراک کی فراہمی میں معاونت فراہم کی گئی، چھوٹے اوردرمیانہ درجہ کے کاروبارکومالی سہارادیاگیا، اس پیکج کے ذریعہ وبا کے دنوں میں معاشرے کے غریب اورکمزورطبقات کو معاونت کی فراہمی کو ممکن بنایاگیا۔انہوں نے کہاکہ مشکل وقت میں ایشیائی ترقیاتی بینک پاکستان کی معاونت میں پرعزم ہے اورملک کو بحالی اوربڑھوتری کی راہ پرگامزن کرنے میں بینک پاکستان کے ساتھ تعاون جاری رکھے گا۔ایشیائی ترقیاتی بینک کی رپورٹ میں کہاگیاہے کہ مشکل وقت میں زراعت امیدکی کرن بنی، مالی سال 2019 میں پاکستان کے زرعی شعبہ نے 0.6 فیصد اور ٹڈی دل کے حملہ ،جس نے کپاس سمیت کئی فصلوں کومتاثرکیا، کے باوجود مالی سال 2020 میں 2.7 فیصد کی شرح سے ترقی کی۔پانی کی دستیابی کی وجہ سے گندم، چاول، مکئی سمیت کئی فصلوں کی پیداوارمیں اضافہ ہوا، پاکستان کی حکومت نے کھادوں پرزرتلافی دی اورزرعی قرضوں کی فراہمی میں بھی اضافہ ہوا۔ رپورٹ میں کہاگیاہے کہ لاک ڈائون کی وجہ سے پاکستان کی صنعت مالی سال 2020 میں 2.6 فیصد سکڑگئی ہے۔ رپورٹ میں کہاگیاہے کہ مالی سال 2019 میں جی ڈی پی کی شرح سے حسابات جاریہ کاخسارہ 4.8 فیصد تھا جو مالی سال 2020ئ میں کم ہوکر1.1 فیصد ہوگیا ہے۔ رپورٹ میں کہاگیاہے کہ جاری مالی سال میں حسابات جاریہ کاخسارہ جی ڈی پی کے 2.4 فیصد تک ہونے کا امکان ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More