The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

کمانڈنٹ ملاکنڈ لیویز ریحان خٹک کا اچانک تحصیل بٹ خیلہ کے مختلف دیہاتوں کا دورہ … پولیو ٹیموں کی سرگرمیوں ، بی ایچ یو خار ،آر ایچ سی جولگرام اور طوطہ کان ہسپتال کا معائنہ … مزید

44

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – آن لائن۔ 22 ستمبر2020ء) ڈپٹی کمشنر / کمانڈنٹ ملاکنڈ لیویز ریحان خٹک نے ضلع ملاکنڈ میں پولیو ٹیموں کی کارکردگی کو مانیٹرنگ کرنے کے لیے منگل کے روز اچانک تحصیل بٹ خیلہ کے مختلف دیہاتوں خار ، جولگرام اور طوط کان کے گائوں کا دورہ کیا اور پولیو ٹیموں کی سرگرمیوں کا معائنہ کیا اس کے علاوہ انہو ں نے بی ایچ یو خار ،آر ایچ سی جولگرام اور طوطہ کان ہسپتال کا بھی معائنہ کیا جبکہ اس موقع پر پانچ سال تک کی عمر کے بچوں کو پولیو کے قطرے بھی پلائے ۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر رحمت علی وزیر ، اسسٹنٹ کمشنر بٹ خیلہ سہیل احمد ،ڈاکٹر اعزاز اور دیگر متعلقہ محکموں کے اہلکار بھی ان کے ہمراہ تھے ۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ ہم پولیو جیسے موذی مرض سے اپنی نئی نسل کو محفوظ بنانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑئینگے ۔

(جاری ہے)

انہوںنے بچوں کے والدین اور ضلع ملاکنڈ کے عوام سے اپیل کی کہ وہ جاری انسداد پولیو مہم کے دوران پولیو ٹیموں سے مکمل تعاون کریں تاکہ پانچ سال تک کے عمر کے تمام بچوں کو پولیو کے قطرے پلائیں جائیں گے ۔

دورے کے دوران ڈپٹی کمشنر نے متعلقہ حکام کو سختی سے ہدایت کی کہ پانچ سال تک کی عمر کے بچوں کو انسداد پولیو کے قطرے پلانے کیلئے مقر ر کردہ 100 فیصد ہدف کے حصول کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں اورخصوصاًً ریفیوزل کیسز کو حل کرنے اور اانکاری والدین کو اس بات پر قائل کریں کہ انسداد پولیو کے قطرے پلانا آنے والی نسل کو جسمانی طور پر محفوظ بنانے کیلئے ضروری ہیں ۔ اُنہوں نے تاکید کی کہ اس سلسلے میں علمائے کرام اور میڈیا کے نمائندوں کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہے تاکہ انسداد پولیو کے قطروں کے بارے میں معاشرے میں پھیلی ہوئی منفی تاثرات کا سد باب کیا جاسکے ۔انہو ں نے پولیو ٹیموں کے ورکروں اور محکمہ صحت کے اہلکاروں کو ہدایت کی کہ و ہ پانچ روزہ انسداد پولیو مہم کو کامیاب بنانے کے لیے اپنی تمام تر توانائیوں کو برئوے کار لائیں تاکہ ضلع کے کونے کونے میں پانچ سال سے کم عمر بچوں کو پولیو کے قطرے پلانے کو یقینی بنائیں۔اس موقع پرڈپٹی کمشنر نے لیویز صوبیدار میجر کو ہدایت کی کہ تما م پولیو ٹیموں کی سیکورٹی یقینی بنائی جائے ۔واضح رہے کہ اس مقصد کے حصول کے لیے 526 ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں جوکہ ایک لاکھ 26 ہزار پانچ سال سے کم عمر بچوں کو پولیو کے قطرے پلائیں جائینگے اور ان ٹیموں کی سیکورٹی کے لیے 544لیویز اہلکاروں کی ڈیوٹی لگائی گئی ہے ۔اُنہوں نے کہا کہ انتظامیہ پولیو مہم کو ہر حالت میں کامیاب بنانے کیلئے اپنی ذمہ داریاں ادا کر ے گی تاکہ ضلع ملاکنڈ پولیو فری ضلع ہو اور یہاں پر پولیو کا کوئی بھی کیس رونما نہ ہو پائے ۔انہوں نے اس ضمن میں مزید کہا کہ جاری مہم کو کامیاب بنانا معاشرے کے تمام طبقات کی مشترکہ ذمہ داری ہے اور اس میں اساتذہ کرام ،والدین ،سول سو سائٹی سمیت تمام مکابت فکر اپنے اپنے حصے کی ذمہ داریاں ادا کریں ۔انہوںنے پولیو ٹیموں کی محنت اور لگن کو سراہتے ہوئے کہا کہ ان کی کوششوں سے نسل نو جسمانی معذوری سے بچ جائے گا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More