The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

کراچی میں فیکٹری مالک نے مزدور کو برہنہ کرکے تشدد کا نشانہ بنادیا … واقعے پر فیکٹری ملازمین کی طرف سے شدید احتجاج کرتے ہوئے کام روک دیا گیا

9

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 ستمبر2020ء)

میں فیکٹری مزدور کو برہنہ کرکے تشدد کا نشانہ بنائے جانے کا واقعہ سامنے آگیا ۔ میڈیا ذرائع کے مطابق

کے علاقے گلزار کالونی میں اجرت مانگنے پر فیکٹری مالک کی طرف سے مزدور کو برہنہ کرکے تشدد کا نشانہ بنایا گیا ، اس واقعے کے خلاف فیکٹری ملازمین کی طرف سے شدید

 واضح رہے کہ پاکستان میں مزدوروں پر تشدد کے واقعات متواتر سامنے آتے ہیں جہاں چند روز قبل 

راجو خانی پولیس نے ایس ایچ او کی گاڑی صاف کرنے سے انکار پر ہوٹل مزدور مشتاق خاصخیلی پر تشدد کرکے منشیات ایکٹ کی ایف آئی آر درج کرکے گرفتار کرلیا تھا ، راجو خانانی پولیس کا محنت کش پر تشدد اور گرفتاری کی اطلاع پر راجو خانانی کے صحافی کوریج کے لیئے پہنچے تو ایس ایچ او اور ہیڈ محرر نے صحافیوں کو زد کوب کرکے ان سے موبائل چھین لیئے تفصیل کے مطابق نوجوان شہر کی ایک ہوٹل پر برتن صاف کرکے گزر سفر کرتا ہے دو روز قبل محنت کش مشتاق خاصخیلی کو پولیس نے ایس ایچ او کی گاڑی صاف نہ کرنے پر گرفتار کیا . اطلاع ملنے پر صحافی جب تھانہ پہنچے تو گرفتار محنت کش نے صحافیوں کو بتا یا کے بڑے منشی انور جسکانی نے مجھے بلاکر کہا ایس ایچ او کی کار کو صاف کرو میں نے کہا ہوٹل کے کام سے فارغ ہوکر کار صاف کر دونگا جس پر ایس ایچ او جبار ملک اور بڑامنشی انور جسکانی نے مجھے گالیاں دیں مجھ پر تشدد کیا اور بعد میں مجھ پر چرس رکھنے کا مقدمہ درج کر دیا ۔

(جاری ہے)

 جبکہ ایک واقعے میں گارڈن روڈ پر لاک ڈائون کے دوران ناکے پر موجود لیویز اہلکاروں کی تشدد سے مزدوری پر جانے والاغلام محمد ولد خان محمد قوم کھیتران ساکن شمس آباد زخمی ہوگیاہسپتال ذرائع کے مطابق زخمی کو سر پر شدید چھوٹیں آئی ہیںجسے ابتدائی طبی امداد کے بعد کوئٹہ ریفر کردیا گیا ہے زخمی نوجوان غلام محمد نے بتایا کہ میں سینیٹر سردار محمد یعقوب ناصر بنگلے میں مزدور ہوں موٹرسائیکل پر کسی دوسرے شخص کے ساتھ ناصر آباد جارہا تھابی اینڈ آر آفس کے سامنے لیویز اہلکار نے ناکے پر روکا میں موٹر سائیکل سے اترا اور پیدال روانہ ہواکہ لیویز اہلکاروں نے شدید تشدد کا نشانہ بنایا اسسٹنٹ کمشنر دکی سید اسد شاہ نے واقعے کا نوٹس لیکر رسالدار لیویز سے رپورٹ طلب کرلی ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More