The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

ڈینگی مچھر سے بچائو کیلئے گھروں میں پانی کے کھلے ذخیرہ سے گریز کیا جائے، ڈاکٹر ذوالفقار علی

10

جمعرات ستمبر
14:08

فیصل آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 17 ستمبر2020ء) ممتاز پبلک ہیلتھ سپیشلسٹ ، ماہر طب و کنسلٹنٹ فزیشن ڈاکٹرذوالفقار علی نے کہا ہے کہ ڈینگی بخار ایک انتہائی خطر ناک مرض ہے جو گھروں یا دیگر مقامات پر ذخیرہ کئے گئے صاف پانی پر پرورش پاتا ہے لہٰذا ڈینگی بخار سے بچائو اور مچھر کی افزائش نسل سے نجات کیلئے گھروں میں صاف پانی کے کھلے ذخیرہ سے گریز کیا جائے اور تیز بخار ، پیشانی کے پیچھے وآنکھوں میں درد کی علامت محسوس ہوتے ہی فوری کنسلٹنٹ ڈاکٹر سے رجوع کیا جائے تاکہ مرض کو پیچیدہ ہونے سے بچایا جا سکے۔ اے پی پی سے بات چیت کے دوران انہوںنے کہا کہ ملیریا پھیلانے والے مچھر گندے پانی پر پرورش پاتے ہیں جبکہ ڈینگی بخار پھیلانے والے مچھروں کی پرورش صاف پانی پر ہوتی ہے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہا کہ گھروں اور رہائشی مقامات کے قرب و جوار میں بارش، نالیوں، سیوریج وغیرہ کا پانی بھی جمع نہ ہونے دیا جائے اور گھروں میں لگائے گئے پودوں و گملوں میں بھی معمول سے کم پانی ڈالا جائے تاکہ گملوں میں پانی موجود نہ رہ سکے۔

انہوںنے کہا کہ ملیریا اور ڈینگی بخار سے بچنے کیلئے گھروں میں حفاظتی و تدارکی اقدام کے تحت مچھر مار سپرے بھی اشد ضروری ہے۔ انہوں نے بتا یا کہ معمولی سی غفلت انسان کو بہت بڑے سانحہ سے دوچار کر سکتی ہے۔ انہوںنے کہا کہ لوگوں کو ہر ماہ معمول کے مطابق بھی میڈیکل چیک اپ کرواتے رہنا چاہیے۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More