The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

ڈیرہ اللہ یار ،اشیاء خوردونوش پھل اور سبزیوں سمیت روزمرہ کے استعمال کے مصنوعات کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ … حالیہ مہنگائی کی لہر نے عوام سے دو وقت کا نوالہ بھی چھین … مزید

10

حالیہ مہنگائی کی لہر نے عوام سے دو وقت کا نوالہ بھی چھین لیا ہے، آمدنی روز بروز کم ہوتی جارہی جبکہ اخراجات مزید بڑھتے جارہے ہیں،شہری

اتوار اکتوبر
18:25

ڈیرہ اللہ یار(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 18 اکتوبر2020ء) ڈیرہ اللہ یار میں اشیاء خوردونوش پھل اور سبزیوں سمیت روزمرہ کے استعمال کے مصنوعات کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ ہوگیا مہنگائی کی لہر سے عوام نے سر پکڑ لیے مہنگائی پر قابو پانے کے حکومتی دعوے محض دعوے ہی رہ گئے عوام کی قوت خرید جواب دے گئی ۔

(جاری ہے)

رپورٹ کے مطابق ملک بھر کی طرح حالیہ مہنگائی کی لہر نے ڈیرہ اللہ یار کو بھی اپنے لپیٹ میں لے لیا ہے اشیاء خوردونوش پھل اور سبزیوں سمیت روزمرہ کے استعمال کے مصنوعات کی قیمتوں میں ریکارڈ اضافہ ہوگیا دودھ دہی کی قیمتیں بھی بڑھ گئی ہیں ڈالر اور پیٹرول مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا سبب بنا کر دکانداروں نے من مانی قیمتیں بڑھا دی ہیں گوشت سبزی دال اور چینی سمیت اشیاء خوردونوش کے نرخوں میں 35 سے 40 فیصد تک اضافہ کردیا گیا دودھ فی کلو 120 دہی 140 انڈے 180 سے 200 ٹماٹر 160 سے 170 پیاز 90 سے 100 جبکہ دیگر سبزیوں کی قیمتیں بھی 100 سے بڑھ گئی ہیں یوٹیلٹی اسٹورز پر بھی عام استعمال کی چیزوں میں 20 سے 25 فیصد تک کا اضافہ کردیا گیا انتظامیہ کی جانب سے مہنگائی کو قابو کرنے اور گرانفروشی کے روک تھام کے لیے اٹھائے اقدام کو بھی دکانداروں نے مسترد کردیا ہے جسکے باعث شہریوں نے سر پکڑ لیے ہیں شہریوں کا کہنا ہے کہ حالیہ مہنگائی کی لہر نے عوام سے دو وقت کا نوالہ بھی چھین لیا ہے 6 ماہ قبل 200 سے 250 میں دو وقت کی سبزی خرید لیتے تھے اب ایک وقت کی سبزی 300 سے 400 روپے میں خریدنے پر مجبور ہیں آمدنی روز بروز کم ہوتی جارہی جبکہ اخراجات مزید بڑھتے جارہے ہیں دکانداروں کا کہنا ہے کہ مارکیٹ میں چیزوں کی قیمتوں میں اضافے کے باعث مجبور ہو کر نرخ بڑھا دیئے ہیں دکانوں اور ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں اضافے کا بوجھ بھی اٹھانا پڑ رہا ہے۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More