The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

ڈپٹی چیئرمین پلاننگ کمیشن ڈاکٹر محمد جہانزیب خان کی زیر صدارت سنٹرل ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی کا اجلاس … 12.25 ارب روپے کی لاگت کے 4 منصوبے منظور، 33.427 ارب روپے کی لاگت کے 2 … مزید

21

12.25 ارب روپے کی لاگت کے 4 منصوبے منظور، 33.427 ارب روپے کی لاگت کے 2 منصوبے حتمی منظوری کے لئے ایکنک کو بھجوا دیئے گئے ، 12.10 ارب روپے کی لاگت کے ایک منصوبہ کی دوبارہ ٹینڈرنگ میں توسیع کی منظوری

بدھ ستمبر
19:19

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 16 ستمبر2020ء) ڈپٹی چیئرمین پلاننگ کمیشن ڈاکٹر محمد جہانزیب خان کی زیر صدارت بدھ کو سنٹرل ڈویلپمنٹ ورکنگ پارٹی کے اجلاس میں 12.25 ارب روپے کی لاگت کے 4 منصوبے منظور، 33.427 ارب روپے کی لاگت کے 2 منصوبے حتمی منظوری کے لئے ایکنک کو بھجوا دیئے گئے جبکہ اجلاس میں 12.10 ارب روپے کی لاگت کے ایک منصوبہ کی دوبارہ ٹینڈرنگ میں توسیع کی بھی منظوری دی گئی۔ اجلاس میں پلاننگ کمیشن کے تمام ممبران جبکہ وفاقی وزارتوں اور صوبائی محکموں کے اعلیٰ افسران نے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے شرکت کی۔ اجلاس میں توانائی، سماجی بہبود اور آبی وسائل کے شعبوں سے متعلق منصوبے پیش کئے گئے۔ سی ڈی ڈبلیو پی کے اجلاس میں توانائی سے متعلق تین منصوبے پیش کئے گئے جس میں پہلا منصوبہ 34.5 میگاواٹ HPP ہارپو (پی سی 1) کے ساتھ وادی ہارپو کی معاشرتی ترقی اور جی بی ڈبلیو پی او کو مستحکم بنانے کے لئے 255 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ پیش کیا گیا۔

(جاری ہے)

مجوزہ منصوبے کا مقصد سکردو میں ہائیڈرو الیکٹرک ورکشاپ کے لئے مشینری اور آلات کی خریداری، وادی ہارپو میں کمیونٹی ڈویلپمنٹ کے مختلف کام ، سی کلاس ڈسپنسری اور گرلز مڈل سکول کی اپ گریڈیشن شامل ہے۔ منصوبہ کو اجلاس میں منظور کر لیا گیا۔ اجلاس میں توانائی کے شعبہ سے متعلق دوسرا منصوبہ 20 میگاواٹ ہائیڈرو پاور پراجیکٹ ہنزل گلگت کا 12109.594 ملین روپے کی لاگت کا پیش کیا گیا جس نے منصوبے کی دوبارہ ٹینڈرنگ کی توسیع کرانے کی منظوری دی۔ اس منصوبے کا بنیادی مقصد دریائے گلگت کے ساتھ ہنزیل ہائیڈرو پاور پراجیکٹ (10 میگاواٹ) کی تعمیر کرنا ہے جو گلگت کے ضلع دریاوی شہر اور آس پاس کے علاقوں میں توانائی منتقل کرنے کے لئے 132 کے وی ٹرانسمیشن لائن کے ذریعے بجلی اور توانائی کی ضروریات کو پورا کرنا ہے۔ توانائی کے شعبہ کا تیسرا منصوبہ کان مہترزئی میں 132 کے وی گرڈ اسٹیشن کی تعمیر اور موجودہ 132 کے وی ڈی/سی مسلم باغ خانوزئی ٹرانسمیشن لائن سے کان مہترزئی کے لئے 132 کے وی فیڈ کی تعمیر کے لئے 263.46 ملین روپے کی لاگت کا منصوبہ پیش کیا گیا جس کو اجلا س میں منظور کر لیا گیا۔ اجلا س میں سوشل ویلفئیر سے متعلق ’’خواتین کی آمدنی میں اضافہ اور خود انحصاری‘‘ کے لئے 7140 ملین روپے کا منصوبہ پیش کیا گیا جس کو اجلا س میں منظور کر لیا گیا۔ اس منصوبے کا مقصد انتہائی غریب خواتین کو معاشرتی تحفظ فراہم کرنا اور غربت میں کمی کے لئے ایک پائیدار حکومت کی قیادت میں نظام قائم کرنا ہے۔ خواتین کی پیداواری شمولیت اور معاشی بااختیاری بھی اس اقدام کا بنیادی مقصد ہے۔ اجلاس میں آبی وسائل سے متعلق تین منصوبے پیش کیے گئے جس میں پہلا منصوبہ بیسول ڈیم پروجیکٹ کے لیے 18,679.89 ملین روپے کی لاگت جبکہ آبی وسائل کے شعبے سے ہی متعلق دوسرا منصوبہ بلوچستان امیں اینٹی گریٹڈ نٹیگر واٹر ریسورس منیجمنٹ اینڈ ڈویلپمنٹ پراجیکٹ کے لئے 14747.74 ملین روپے کی لاگت کا پیش کیا گیا دونوں منصوبے حتمی منظوری کے لئے ایکنک کو بھجوا دیا گئے۔ اجلاس میں آبی وسائل سے متعلق تیسرا منصوبہ ’’انڈس 21 واٹر سیکٹر بلڈنگ اینڈ ایڈوائزری سروسز پراجیکٹ” جس کی کل لاگت 4,593.97 ملین روپے مختص کی گئی منظور کر لیا گیا۔ سی ڈی ڈبلیو پی کے اجلاس میں دو پوزیشن پیپرز اور دو کانسپٹ کلئیرنس پیپرز بھی زیر بحث آئے۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More