The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

ڈرپ اریگیشن سے فصل کو پانی ، ہوا ، غذائی اجزاء ضرورت کے مطابق یکساں طورپر ملتے رہتے ہیں، ماہرین

10

جمعرات ستمبر
14:08

فیصل آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 17 ستمبر2020ء) جامعہ زرعیہ کے ماہرین نے ناہموار کھیتوں ، نہری پانی کی کمی اور زیرزمین ناقص پانی والے علاقوں میں ڈرپ اریگیشن کو موزوں ترین ٹیکنالوجی قراردیا ہے اورکہاہے کہ فلٹریشن سسٹم ، فرٹیگشن یونٹ ، پائپ نیٹ ورک اور ڈرپ لائن کے ذریعے پانی ، کھاد ، دیگر کیمیائی اجزاء پودوں کی ضرورت کے مطابق اس کی جڑوں تک پہنچائے جاسکتے ہیں جس سے نہ صرف پانی و کھاد کی بچت ہو تی ہے بلکہ پیداوار میں بھی شاندار اضافہ ہوتا ہے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ چونکہ کاشتکاری اب ایک مکمل کاروبار بن چکی ہے لہٰذا اسے بے پناہ اخراجات ، توانائی کے بحران ، پیداواری عوامل ، مزدوروں کی عدم دستیابی جیسے مسائل سے بچا کرمناسب منافع کمایا جاسکتاہے۔ انہوںنے کہاکہ ڈرپ اریگیشن سے فصل کو پانی ، ہوا ، غذائی اجزاء ضرورت کے مطابق یکساں طورپر ملتے رہتے ہیں اسلئے فصل بغیر کسی دبائو کے نشو و نماپاتی ہے جس سے فصل کامعیار بھی بہترہوتاہے۔ انہوںنے بتایاکہ اس ضمن میں مزید رہنمائی کیلئے ماہرین زراعت کی خدمات سے بھی استفادہ کیاجاسکتاہے۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More