The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

چیف جسٹس ہائیکورٹ نے سابق آئی جی کے تبادلے کیخلاف درخواست پر اعتراض ختم کرتے ہوئے درخواست سماعت کیلئے منظور کرلی

3

منگل ستمبر
16:55

چیف جسٹس ہائیکورٹ نے سابق آئی جی کے تبادلے کیخلاف درخواست پر اعتراض ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 15 ستمبر2020ء) چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے سابق آئی جی پنجاب کے تبادلے کیخلاف درخواست پر اعتراض ختم کرتے ہوئے درخواست سماعت کیلئے منظور کرلی۔چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے مسلم لیگ (ن)کے رہنما و رکن اسمبلی ملک احمد خان کی درخواست پر بطور اعتراض کیس کی سماعت کی۔ پنجاب حکومت کی جانب سے ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل ملک عبدالعزیزاعوان پیش ہوئے۔چیف جسٹس ہائیکورٹ نے درخواست گزار سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ کیا کسی اتھارٹی سے بنیادی حقوق کی رٹ میں تبادلے سے متعلق پوچھا جا سکتا ہی ۔چیف جسٹس نے نکتہ اٹھایا کہ سوال یہ ہے کہ سول سرونٹ کے علاوہ کوئی کسی تبادلے میں متاثرہ فریق ہو سکتا ہے،کیا کسی افسر کے تبادلے سے کسی شہری کا بنیادی حق متاثر ہوتا ہی ۔

(جاری ہے)

درخواست گزار ملک احمد خان نے درخواست کے قابل سماعت ہونے پر دلائل دیئے کہ پولیس آرڈر کی موجودگی میں 6 آئی جیز کا تبادلہ ہوا، حکومت کو پولیس آرڈر کی کوئی پرواہ نہیں، وہ پبلک سیفٹی کمیٹی کے ممبر ہیں جو اس تبادلے سے متاثرہ ہے۔سرکاری وکیل نے درخواست کی مخالفت کی اور واضح کیا کہ درخواست گزار متاثرہ فریق نہیں، صرف وہی شخص متاثرہ ہے جس کا تبادلہ ہوا۔چیف جسٹس ہائیکورٹ نے سی سی پی او لاہور عمر شیخ کے تقرر کیخلاف درخواست پر بھی اعتراض کو ختم کردیا اور سابق آئی جی شعیب دستگیر کے تبادلے اور سی سی پی او عمر شیخ کے تقرر کیخلاف درخواست سماعت کیلئے منظور کرلی۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More