The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ کی خصوصی ہدایت پر دیگر اضلاع کی طرح صوابی میں بھی ہفتہ صفائی مہم منایا گیا

12

اتوار ستمبر
19:35

صوابی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 13 ستمبر2020ء) چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ کی خصوصی ہدایت پر دیگر اضلاع کی طرح صوابی میں بھی ہفتہ صفائی مہم منایا گیا ۔اس سلسلے میں جوڈیشل کمپلکس شاہ منصور میں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج صوابی حافظ نسیم اکبر کی خصوصی ہدایت اور نگرانی میں جوڈیشل بیوٹیفیکیشن کمیٹی کے چیر مین ایڈیشنل سیشن جج ماڈل کورٹ محمد زیب خان، ایڈمن سینئر سول جج محمد انعام خان، سول جج عامر افریدی سینئر سول جج محترمہ تانیہ ھاشمی، سول جج محترمہ نورین فاروق اور ڈسٹرکٹ بار صوابی کے صدر صغیر خان،جنرل سیکرٹری صفدر زیب ایڈووکیٹ، لاہور بار کے صدر تنویر شہزادنائب صدر عاقل محمد ایڈووکیٹ،گوھر خان ایڈووکیٹ،ٹی ایم اے سٹاف اورجوڈیشل کمپلیکس شاہ منصور میں تعین کلاس فور سٹاف ممبران نے ملکرجوڈیشل کمپلیکس شاہ منصور میں مختلف قسم کے پودے لگائے ہفتہ صفائی مہم کے اختتام پر چیر مین بیوٹیفیکیشن کمیٹی ایڈیشنل سیشن جج محمد زیب حان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صفائی نصف ایمان ہے ایمان اور حب الوطنی کی جزبے سے سرشار آپ لوگوں نے ثابت کیا کہ پاکستانی قوم ایک ذمہ دار قوم ہے اور ذمہ داری نبھاتے ہوئے پورے ملک کو گرین اور کلین بنایا جا سکتا ہے۔

(جاری ہے)

اس ہفتہ کے دوران محکمہ جنگلات کے تعاون سے کمپلیکس کے اندر کئی پودے اور درحت بھی لگاے گئے انہوں نے کہا کہ ماحول صاف ستھرا رہ کر خوشی امن اور بھائی چارے کا فضاء بنایا جا سکتا ہے۔ اور بیماریوں کا سد باب میں اہم کردار ادا کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بحثیت پاکستانی ہم سب کا فرض ہے کہ ماحول کی صفائی اور بیماریوں کی خاتمے کیلئے صفائی کے مہم میی اپنا حصہ ڈالیں اور صفائی کا کام ایک ہفتے کا نہیں بلکہ پورے زندگی کا ہے یہ تو ہم نے آغاز کیاہے اس عمل کو آگے لے جانا ہم سب کی ذمہ داری ہے۔ آیئے آج یہ عہد کریں کہ ماحول کی صفائی کے لئے یک جان قالب کے طور کام کرتے رہیں گے ۔صغیر حان،عاقل محمد اور تنویر شہزاد ایڈوکیٹس نے اس سلسلے میں وکلاء برادری کی طرف سے ہرقسم تعاون کا یقین دلایا۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More