The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس نے اسلام آباد دارالحکومت علاقہ جات وقف املاک بل 2020ء کی منظوری دے دی

13

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 16 ستمبر2020ء) پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس نے اسلام آباد دارالحکومت علاقہ جات وقف املاک بل 2020ء کی منظوری دے دی ہے۔ بدھ کو پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں وزیراعظم کے مشیر برائے پارلیمانی امور ڈاکٹر بابر اعوان نے تحریک پیش کی کہ وقف املاک کے بہتر انتظام و انصرام کے لئے بل اسلام آباد دارالحکومت علاقہ جات وقف املاک بل 2020ء زیر غور لایا جائے جس پر اپوزیشن کی طرف سے 190 ارکان نے مخالفت کی جبکہ حکومت کی طرف سے پہلی خواندگی کے حق میں 200 ارکان نے اپنی رائے کا اظہار کیا۔ سینیٹر رضا ربانی نے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم کے مشیر وفاقی وزیر کے برابر عہدہ رکھ سکتے ہیں تاہم ایگزیکٹو کا کردار ادا نہیں کر سکتے۔

(جاری ہے)

مشیر اور معاون خصوصی ایوان میں تحریک اور بل پیش نہیں کر سکتے۔ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ یہ درست ہے کہ پانچ مشیروں کے پاس آئین میں رعایت ہے کہ وہ ایوان میں بیٹھ سکتے ہیں لیکن ووٹ نہیں دے سکتے اور وہ حکومت کی ترجمانی نہیں کر سکتے۔

وزیر قانون فروغ نسیم نے کہا کہ بابر اعوان وزیراعظم کے مشیر ہیں۔ آئین کے مطابق ایوان میں ووٹ نہیں دے سکتے۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ معاونین خصوصی سے متعلق ہے۔ عدالتی فیصلے میں کوئی پابندی نہیں لگائی گئی کہ یہ بل پیش نہیں کر سکتے۔ پہلی خواندگی کی ایوان سے منظوری کے بعد سپیکر نے یکے بعد دیگر ایوان سے بلوں کی تمام شقوں پر منظوری حاصل کی۔ اپوزیشن کی طرف سے سینیٹر محمد مشتاق کی پیش کردہ ترامیم مسترد کر دی گئیں جبکہ حکومت کی طرف سے کنول شوذب کی ترامیم منظور کرلی گئیں۔ وزیراعظم کے مشیر برائے پارلیمانی امور ڈاکٹر بابر اعوان نے تحریک پیش کی کہ اسلام آباد دارالحکومت علاقہ جات وقف املاک بل 2020ء منظور کیا جائے۔ مجلس شوریٰ نے بل کی کثرت رائے سے منظوری دے دی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More