The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

ًاسلامی جمہوریہ پاکستان میں سیکولر اور لادینی نصاب کی کوئی گنجائش نہیں،تنظیم اساتذہ … وفاقی حکومت یکساں نظام تعلیم کا ذکر باربار کرتی ہے مگر عملی اقدامات سے پہلو تہی … مزید

14

?ٹنڈوآدم (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – آن لائن۔ 13 ستمبر2020ء) اسلامی جمہوریہ پاکستان کے نصاب تعلیمی میں سیکولر اور لادینی نظریات کی کوئی گنجائش نہیں ہی.اٹھارویں ترمیم کے باوجود سندھ حکومت صوبے میں تعلیمی پسماندگی دور کرنے میں ناکام ہی. وفاقی حکومت یکساں نظام تعلیم کا ذکر باربار کرتی ہے۔مگر عملی اقدامات سے پہلو تہی کرتی رہتی ہے وزیر تعلیم شفقت محمود نے پہلے کہا تھا کہ 2020 سے ملک میں یکساں نصاب نافذ کر دینگے۔اس میں ناکام رہے اور اب پھر قوم سے کہا جارہا ہے کہ 2021میں یکساں نصاب پڑھایا جائے گا۔یکساں نصاب کے نام پر غیروں کا نصاب پڑھانے کی تیاری ہو رہی ہے ،اسلامی جمہوریہ پاکستان میں سیکولر اور لادینی نظریات کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ان خیالات کا اظہار تنظیم اساتذہ پاکستان کے مرکزی جوائنٹ سیکرٹری پروفیسر ابو عامر اعظمی، صوبائی صدر پروفیسر نصراللہ لغاری،ٹنڈوآدم ایجوکیشنل سوسائٹی کے چیئرمین عبدالعزیز غوری ایڈوکیٹ نے ٹنڈو آدم ضلع سانگھڑ میں تنظیم اساتذہ صوبہ سندھ کے تحت منعقدہ تربیت گاہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

(جاری ہے)

صوبائی تربیت گاہ سے نائب صدر اسلامک سرکل نارتھ امریکہ ڈاکٹر شاہد رفیق، اسسٹنٹ ڈائریکٹر سیکنڈری ایجوکیشن حیدرآباد زین العابدین لغاری، ڈپٹی ڈائریکٹر سیکنڈری اسکول ایجوکیشن حیدرآباد محمد یامین شیخ ، ڈپٹی ڈی او ایجوکیشن ضلع سانگھڑ سید عبیداللہ شاہ ،مولانا عبدالقدوس احمدانی،مولانا حافظ نصراللہ عزیز چنہ ، پروفیسر رئیس احمد منصوری، اور پروفیسر عبدالحفیظ احمدانی نے بھی خطاب کیا۔بعد ازاں تنظیم اساتذہ صوبہ سندھ کے صدر پروفیسر نصراللہ لغاری نے اساتذہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سندھ میں محکمہ تعلیم میں بھی بے تحاشا کرپشن موجود ہے۔اسکولوں میں فرنیچر اور عمارت کی مرمت کے نام پر فنڈ میں گھپلے ہوتے ہیں۔اٹھارویں ترمیم کے باوجود سندھ حکومت صوبے سے تعلیمی پسماندگی دور کرنے میں ناکام ہے۔سرکاری اساتذہ بھی حکومتی اقدامات سے خوش نہیں رہتے۔ مقررین نے کہا کہ ہم اسلامی اصولوں کے مطابق اگر اپنی زندگیوں کو بسر کریں اور جو قوم کے نونہال ہمارے سپرد کئے گئے ہیں انہیں بہتر سے بہتر تعلیم دیں اور انکی اسلامی خطوط پر تربیت کریں تاکہ وہ بڑے ہوکر معاشرے میں اپنا کردار ادا کرسکیں

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More