The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

وینزویلا کے صدر انسانیت کے خلاف جرائم میں ملوث ہیں، اقوام متحدہ کے تفتیش کاروں کی رپورٹ

6

جنیوا (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 17 ستمبر2020ء) اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ وینزویلا کے صدر اور اہم ترین وزرا انسانیت کے خلاف جرائم کے ذمہ دار ہیں۔ عالمی اداریکے تفتیش کاروں نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ وینزویلا کی حکومت حقائق چھپانے کے لئے دروغ گوئی سے کام لے رہی ہے۔ انسانی حقوق کی مبینہ خلاف ورزیوں کی تحقیقات کرنے والی ٹیم کو ایسے شواہد ملے ہیںکہ صدر نکولس مادوروسمیت ریاستی حکام ماورائے عدالت قتل اور بہیمانہ تشدد کے مرتکب ہوئے۔ عالمی مشن کی چیئرپرسن مارٹا ویلینس کا کہنا ہے کہ حکام اور سکیورٹی فورسز نے 2014 سے انسانی حقوق کی سنگین پامالیاں کی ہیں جن میں ماورائے عدالت قتل،عصمت دری ، گلہ گھونٹنا، مار پیٹ ، بجلی کے جھٹکے اور اعتراف جرم کے لئے جان سے مارنے کی دھمکیوں سمیت سنگین جرائم شامل ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے بتایا کہ ہماری سہ رکنی تفتیشی ٹیم نے متاثرہ افراد اور عینی شاہدین کے بیانات لئے جن سے یہ بات سامنے آئی کہ ان جرائم میں کمانڈنگ افسران اور سینئر سرکاری عہدیداروں کا براہ راست کردار تھا۔

ویلینس نے کہا کہ ماورائے عدالت قتل کے واقعات کو سیکورٹی فورسز میں نظم و ضبط کے فقدان کا نتیجہ نہیں کہا جا سکتا کیونکہ حکومت نے پالیسی کے تحت ناپسندیدہ افراد کوراستے سے ہٹایا۔ انہوں نے وینزویلا سے سپیشل ایکشن فورسز (ایف اے ای ایس) کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا ۔ 411 صفحات پر مشتمل رپورٹ میں وینزویلا کے صدر کے علاوہ وزیر داخلہ ، وزیر انصاف انصاف اور وزیر دفاع کو بھی قصوروار قرار دیا گیا ہے۔ مشن نے 2014ء سے لے کر اب تک کے جن 2500 واقعات کا جائزہ لیا اُن میں سکیورٹی فورسز کے ہاتھوں 5 ہزار سے زیادہ ہلاکتیں ہوئی تھیں ۔ تفتیش کار فرانسسکو کاکس نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ صدر نے بعض مواقع پر قومی انٹلیجنس سروس (سیبن) کو مخالفین کی نظربندیوں اور گرفتاریوں کے براہ راست احکامات بھی دئیے۔ انہوں نے زور دیا کہ بین الاقوامی فوجداری عدالت اس معاملے کا قانونی جائزہ لے ۔ کاکس نے کہا کہ تفتیش کاروں نے دونوں ایجنسیوں کے 45 اہلکاروں کی فہرست تیار کی ہے جن کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جانی چاہئے۔دوسری جانب وینزویلا کے وزیر خارجہ جارج اریزا نے اقوام متحدہ کی رپورٹ کو ہدفِ تنقید بناتے ہوئے ٹویٹر پرکہا کہ رپورٹ پہلے سے طے شدہ تھی اور یہ ایک سال قبل امریکہ کی تابع حکومتوں کی مرضی سے بنائی گئی۔ اپوزیشن لیڈر جوآن گوائیڈو نے کہا کہ رپورٹ سے ثابت ہوتا ہے کہ صدر نے منشیات کی اسمگلنگ ،دہشت گردی کی حمایت اورانسانیت کے خلاف جرائم کا ارتکاب کیا۔ واضح رہے کہ وینزویلا میں معاشی بحران کے دوران ہونے والے سیاسی احتجاج کو کچلنے کے لئے صدر پر طاقت کے ناجائز استعمال کا الزام ہے ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More