The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

ملک میں مسلسل جرائم، جنسی ہراسگی اور وارداتوں کی روک تھام کے لیے قرآن و سنت کے موثر قوانین کا نفاذ ناگزیر ہوچکا ہے،جمعیت علماء اسلام نظریاتی پاکستان

6

بدھ ستمبر
22:34

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – آن لائن۔ 16 ستمبر2020ء) جمعیت علماء اسلام نظریاتی پاکستان کے صوبائی امیر مولناعبدالقادرلونی جنرل سیکرٹری حافظ عبدالاحدکبدانی نائب امیر سید حاجی عبدالستار چشتی سرپرست مولوی نعمت اللہ شیرانی ڈپٹی جنرل سیکرٹری حاجی عبیداللہ حقانی جوائنٹ سیکرٹری میرمبارک خان محمد حسنی ناظم حاجی حیات اللہ کاکڑ سیکرٹری اطلاعات مولوی رحمت اللہ حقانی سیکرٹری مالیات حافظ عبدالواحد ہاشمی ودیگرنے کہا کہ ملک میں مسلسل جرائم، جنسی ہراسگی اور وارداتوں کی روک تھام کے لیے قرآن و سنت کے موثر قوانین کا نفاذ ناگزیر ہوچکا ہے جس میں انسانیت کی جان، مال، عزت اور آبرو کے محفوظ ہونیکی ضمانت ہے اسلام کے آفاقی قوانین کو ترجیحی بنیادوں پر نافذ کردیا جائے ریاست مدینہ میں قرآن و سنت کیحدود و تعزیرات کا منظم نظام نے جرائم کی بیخ کنی کرکے دنیا کے سامنے ایک مثالی معاشرے کی تصویر پیش کی آج بھی ملک میں حدود الہی کے نفاذ سے جرائم کے راستے مسدود ہو جائیں انسان کے خود ساختہ قوانین سے جرائم کی بیخ کنی سے نہیں ہوسکتی ہے حدودو تعزیرات کا بنیادی مقصد انسانی زندگی کوتحفظ اور درندہ صفت انسانوں کو جرائم سے روکنا تھا انہوں نے کہا کہ ریاست کے زمہ داری ہے کہ انسانی معاشروں کو گھنانے جرائم سے پاک کرکے معاشرے میں بسنے والے افراد کے جان، مال، عزت اورآبرو کی حفاظت کرے ملک عرصے سے دہشت گردی اور قتل و غارت گری اور جنسی زیادتیوں کے واقعات تواتر سے رونما ہوتے رہتے ہیں۔

(جاری ہے)

ان جرائم پر قابو پانے کے لیے حکومتیں طرح طر ح کے اقدامات کرنے کی کوشش کررہی ہے لیکن کئی برس گزر جانے کے باوجود بھی نہ ملک امن و سکون کا گہوارابن سکا ۔اور نہ جرائم کاخاتمہ ہوسکا جرم و سزا کا موجودہ نظام جرائم کی روک تھام میں بری طرح ناکام ہو چکا ہے جرائم اوروارداتوں کی روک تھام کے لیے قرآن و سنت میں موثر قوانین کا نفاذ ناگزیر ہوچکا ہے جوہر شخص کی جان، مال، عزت اور آبرو کیمحفوظ ہونیکی ضمانت دیتے ہیں اسلام کے آفاقی قوانین کو ترجیحی بنیادوں پر نافذ کردیا جائے انہوں نیکہا کہ دین اسلام ایک جامع مکمل اور کامل دین اور طریق حیات ہے، جس کی تعلیمات ہمہ گیر ، عالمگیر اور سراسر خیر خواہی پر مبنی ہیں، دین ِ اسلام کے ہر حکم میں نہ صرف انسانوں بلکہ تمام مخلوقات کی خیر خواہی اور بھلائی موجود ہے جب تک مسلمانوں کی انفرادی و اجتماعی زندگی قرآن کے سانچے میں نہیں ڈھلے گی یہ جرائم اور مصائب کم نہیں ہوں گی

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More