The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

مزری سے بنی ہاتھ کی ٹوکریوں اور دیگر اشیا ء کی نمائش کی افتتاحی تقریب … نمائش میں مزری پودے سے بنائی گئی ہاتھ کی ٹوکریوں اور دیگر مختلف اشیاء کے سٹالز لگائے گئے

2

نمائش میں مزری پودے سے بنائی گئی ہاتھ کی ٹوکریوں اور دیگر مختلف اشیاء کے سٹالز لگائے گئے

بدھ ستمبر 20:41

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – آن لائن۔ 16 ستمبر2020ء)مزری سے بنی ہاتھ کی ٹوکریوں اور دیگر اشیا ء کی نمائش کی افتتاحی تقریب سنٹرل اورکزئی مشتی میلہ میں منعقدہوئی۔اس موقع پرڈپٹی کمشنراورکزئی واصل خان خٹک مہمان خصوصی تھے جبکہ اس میں ،اے سی امتیاز علی شاہ، تحصیلدار خالد، ڈی ایس پی محبوب خان، ایف آر ڈی کے پروگرام منیجر فہیم خان، ضلعی انتظامیہ کے افسران نے بھی شرکت کی۔ اس دلچسپ سرگرمی میںقبائلی عوام نے انتہائی دلچسپی اورذوق وشوق سے شرکت کی۔ نمائش میں مزری پودے سے بنائی گئی ہاتھ کی ٹوکریوں اور دیگر مختلف اشیاء کے سٹالز لگائے گئے تھے۔ ڈپٹی کمشنر اور دیگر افسران نے سٹالوں کا معائنہ کیا ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر واصل خان خٹک نے شرکاء پر زوردیا کہ بازار سے سودا سلف لانے کیلئے پلاسٹک تھیلوں کی بجائے مزری کی ٹوکریاں استعمال کریں تاکہ پلاسٹک بیگ کے مضر اثرات سے بچا جا سکے کیونکہ مزری کی ٹوکریاں اور دیگر اشیاء استعمال کرنے سے صحت مند ماحول پیدا ہوتا ہے جبکہ یہ ٹوکریاں پلاسٹک بیگ سے پیدا ہونے والے امراض سے بچانے کا ذریعہ بھی بن سکتے ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ مزری کی مختلف پراڈکس کودوسرے اضلا ع میںفروخت کرکے باعزت گھریلوں روزگار کے مواقع میں بھی اضافہ کیا جاسکتا ہے۔ ڈپٹی کمشنر نے تمام دکانداروں کو ہدایت کی کہ وہ پلاسٹگ بیگز کی بجائے ہاتھوں سے بنی ہوئی مزری کی ٹوکریاںدکانوں میں رکھیں اور سودا سلف لینے والوں کو پلاسٹک بیگز کی بجائے مزری کی ٹوکریوںمیںڈال کر دیں ۔یاد رہے کہ قبائلی ضلع اورکزئی میں پہلی بار مزری سے بنائی گئی اشیاء کی سرکاری طور پر نمائش کی گئی ہے اور مزری سے بنی اشیاء کے استعمال اور ان کے فوائد اور تجارت کے حوالے سے آگاہی دی گئی ہے۔ تقریب کے آخر میں ڈی سی واصل خان نے حاضرین میں مزری سے ہاتھ کی بنی ہوئی 700ٹوکریاں مفت تقسیم کیں

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More