The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

لاہور: اقراء کائنات کی موت بھوک اور پیاس کی وجہ سے ہوئی، انکوائری رپورٹ میں انکشاف … کائنات تو اس دنیا کو چھوڑ کر چلی گئی لیکن اس معاشرے کو انصاف کی ضرورت ہی: افشاں لطیف

6

کائنات تو اس دنیا کو چھوڑ کر چلی گئی لیکن اس معاشرے کو انصاف کی ضرورت ہی: افشاں لطیف

منگل ستمبر
20:19

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – آن لائن۔ 15 ستمبر2020ء) چند روز قبل کاشانہ ویلفیئر ہوم میں پر اسرار طور پر جاں بحق ہونے والی شادی شدہ اقراء کائنات کی ہلاکت کے حوالے سے کی جانے والی انکوائری کی رپورٹ منظر عام پر آگئی ہے۔ رپورٹ میں اقراء کائنات کی موت کی وجہ بھوک قرار دیا گیا ہے اور سفارش کی گئی ہے کہ اس معاملے کی تحقیقات پولیس سے کروائی جائے جبکہ سفارشات میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ادارے کی سابق سپرنٹنڈنٹ افشاں لطیف کی جانب سے لگائے گئے بے بنیاد الزامات پر ان کے خلاف کارروائی کی جائے اور افشاں لطیف کے خلاف باقاعدہ مقدمہ درج کیا جائے رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اقراء کائنات کی موت قدرتی نہیں تھی۔ بلکہ اس کی موت بھوکا رہنے سے ہوئی رپورٹ کے مطابق اقراء کائنات کی حالت خراب ہونے پر وہ مختلف اداروں کے درمیان شٹل کاک بن کر رہ گئی۔

(جاری ہے)

اقراء کائنات کے اپنے شوہر کے ساتھ تعلقات نا خوشگوار تھے جس کے باعث اقراء کائنات شدید ڈپریشن کا شکار ہوچکی تھی۔دوسری جانب کاشانہ ویلفیئر ہوم کی سابق سپرنٹنڈنٹ افشاں لطیف کا کہنا ہے کہ اقراء کائنات کو دو ماہ تک چائلڈ پروٹیکشن بیورو میں راجہ بشارت کے حکم پر رکھا گیا اور کئی ہفتوں بھوکا پیاسا رکھ کر قتل کیا گیا، انہوں نے کہا کہ میں نے اپنی جان پر کھیل کر کائنات کا پوسٹ مارٹم کروایا، مجھے اور میری فیملی کو جان سے مارنے کی دھمکیاں دی گئیں، افشاں لطیف کا کہنا تھا کہ عوام، میڈیا اور سوشل میڈیا کی مشکور ہوں جنہوں نے اقراء کائنات کے پوسٹ مارٹم کے لئے میری آواز ساتھ آواز اٹھائی، تینوں اداروں چائلڈ پروٹیکشن بیورو، کاشانہ ویلفیئر ہوم اور دارالامان سے کائنات کا ریکارڈ غائب کر دیا گیا، کائنات کے قتل کی تحقیقات سے ان اداروں میں جنسی زیادتی کے واقعات کو کنٹرول کیا جا سکے گا، کائنات تو اس دنیا کو چھوڑ کر چلی گئی لیکن اس معاشرے کو انصاف کی ضرورت ہے۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More