The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

قتل واقدام قتل کیس میں ملزم کی اپیل خارج

14

پشاور۔16 ستمبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 16 ستمبر2020ء) پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس لعل جان خٹک اور جسٹس عتیق شاہ پر مشتمل دورکنی بنچ نے ایک بھائی کو قتل اور دوسرے بھائی کو زخمی کرنے کے مقدمے میں مجموعی طور پر 37سال قیدبامشقت کی سزا پانے والے ملزم کی اپیل خارج کرتے ہوئے سزا برقراررکھی۔ملزم محمد روئیدارکیجانب سے کیس کی پیروی شبیرحسین گگیانی ایڈوکیٹ نے کی جبکہ مدعی مقدمہ محمد ابرار کی جانب سے الطاف خان ایڈوکیٹ عدالت میں پیش ہوئے۔دوران سماعت ملزم کے وکیل شبیرحسین گگیانی نے عدالت کو بتایا کہ اسکے موکل پر الزام ہے کہ اس نے 30اپریل 2010کو پولیس سٹیشن زیدہ صوابی کی حدود میں چھریوں کے وار کرکے اپنے بھائی محمد اظہار کو قتل جبکہ دوسرے بھائی محمد اظہارکوزخمی کیا تھا۔

(جاری ہے)

وجہ عناد رقم کا تنازعہ بتائی گئی ہے۔ عدالت کو بتایاگیا کہ ملزم کو اظہارکے قتل کے جرم میں 25سال قید جبکہ ابرارکو زخمی کرنے کے جرم میں 10سال اورغیرقانونی اسلحہ رکھنے کیلئے دوسال کی قید کی سزا کیساتھ ساتھ 30لاکھ روپے جرمانے کی بھی سزا سنائی گئی۔

تاہم نہ تو ملزم کو 382bکے تحت فائدہ دیاگیا نہ ہی یہ سزاایک ساتھ شمارہوگی بلکہ یہ قراردیاگیا ہے کہ یہ سزا ایک کے بعد دیگرے شروع ہوگی انہوںنے عدالت کو بتایا کہ یہ سزا غیرآئینی وغیرقانونی ہے۔دوسری جانب مدعی مقدمہ کے وکیل الطاف خان نے عدالت کو بتایا کہ اسکے موکل کوچھریوں کے وارکرکے زخمی کیاگیا جبکہ دوسرے بھائی کو قتل کیاگیااور اس حوالے سے ایف ایس ایل رپورٹ پازیٹیوآنے کیساتھ ساتھ وہاں گواہوں کی موجودگی بھی ہے جو کہ ملزمان اورمدعی مقدمہ کے بھائی ہیں لہذا ملزم کو غیرضروری طو رپر نامزد نہیں کیاگیااورماتحت عدالت نے ملزم کو درست سزا دی ہے۔ عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر ملزم کی اپیل خارج کردی جبکہ ماتحت عدالت کے فیصلے کو برقراررکھا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More