The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

فیصل آباد سمیت پنجاب بھر میں مستحق سائلین کو مفت قانونی امداد کی فراہمی کے لیے دو سال بعد بھی بنائے گئے لیگل ایکٹ پر عملدرآمد نہ ہو سکا

11

اتوار اکتوبر
23:05

:فیصل آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – آن لائن۔ 18 اکتوبر2020ء) فیصل آباد سمیت پنجاب بھر میں مستحق سائلین کو مفت قانونی امداد کی فراہمی کے لیے دو سال بعد بھی بنائے گئے لیگل ایکٹ پر عملدرآمد نہ ہو سکا، حکومتوں کی طرف سے ہر دور میں غریب ومستحق سائلین کو مفت قانونی امداد فراہم کرنے کا نعرہ تو بلند وبانگ لگایا جاتا رہا لیکن عملی طور پر اس بنائے گئے پنجاب لیگل ایڈ ایکٹ 2018 پر دو سال گزرنے کے بعد عملدرآمد کا معاملہ التواء کا شکار نظر آ رہا ہے حکومت نے اس سلسلہ میں غریب ومستحق افراد کی قانونی مدد کے لیے پنجاب لیگل ایکٹ 2018 بنایا لیکن کروڑوں کے فنڈز مختص کرنے کے باوجود اس فری لیگل ایڈ ایجنسی کی کارکردگی صرف دعوئوں تک محدود ہو کر رہ گئی، فیصل آباد سمیت پنجاب بھر میں مستحق ونادار افراد قانونی امداد سے محروم نظر آ رہے ہیں جس کی وجہ سے ایسے لوگوں کو انصاف کی فراہمی میں مشکلات کا سامنا ہے انصاف کی فراہمی میں تاخیر کی وجہ سے ایسے افراد کو ذہنی کرب میں مبتلا کر دیا حکومت اپنے منشور کے مطابق انصاف لوگوں کو گھروں کی دہلیز پر میسر آئیگا، اس پر عمل پیرا ہوتے ہوئے پنجاب لیگل ایڈ ایکٹ 2018 پر عملدرآمد کروائے تاکہ مستحق افراد کو وکلاء کی مفت خدمات حاصل ہو سکیں۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More