The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری مابت کاکا کی پشتون سٹوڈنٹس کونسل کے مطالبات کی مکمل حمایت … کونسل کے تمام مطالبات پر حکومت اورمتعلقہ اداروں کو فوری عملدرآمد … مزید

25

کونسل کے تمام مطالبات پر حکومت اورمتعلقہ اداروں کو فوری عملدرآمد کرانا ان کے فرائض منصبی میں شامل ہے پنجاب کے تمام تعلیمی اداروں خصوصاً بہائو الدین زکریا یونیورسٹی ملتان میں ہمارے صوبے کے طلباء کے لئے مخصوص سیٹیں دوبارہ بحال کی جائیں ملک کے اہم اور اعلیٰ تعلیمی اداروں میں اوپن میرٹ پر صوبے کے طلباء کو دوبارہ مفت داخلے دئیے جائیں ، ما بت کا کا

اتوار اکتوبر
23:10

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 18 اکتوبر2020ء) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری مابت کاکا نے پشتون سٹوڈنٹس کونسل کے مطالبات کی مکمل حمایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پشتون طلبہ کو حصول علم میں غیر معمولی مشکلات کا سامنا ہے مخصوص نشستوں کی بحالی ،صوبے کی ہونہار طلباکیلئے اوپن میرٹ کے تحت داخلے ، تعلیمی وظائف او ر سہولیات کی فراہمی پنجاب بھر کے تعلیمی اداروں میں پشتون بلوچ طلباء پر آئے روز مسلح انتہاپسندوں کے حملے یونیورسٹیز انتظامیہ کی جانب سے روا رکھا جانیوالا معاندانہ طرز عمل نہ صرف قابل مذمت بلکہ قابل گرفت عمل ہے عوامی نیشنل پارٹی اپنے آنیوالے کل کیلئے ہر فورم پر آواز اٹھاتی رہیگی ان خیالات کااظہار انہوں نے گزشتہ روز پشتون سٹوڈنٹس کونسل کے احتجاجی کیمپ آمد کے موقع پر احتجاج پر بیٹھے طلباء سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔

(جاری ہے)

اس موقع پر عوامی نیشنل پارٹی ضلع کوئٹہ کے صدر جمال الدین رشتیا اور جنرل سیکرٹری نذر علی پیر علیزئی بھی ان کے ہمراہ تھے۔پشتون سٹوڈنٹس کونسل بہائو الدین زکر یا یونیورسٹی کے طلباء نے اے این پی رہنمائوں کو اپنے جاری احتجاجی تحریک اور مطالبات کے حوالے سے آگاہ کیا اس موقع پر اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری مابت کاکا نے کہا کہ کونسل کے تمام مطالبات پر حکومت اورمتعلقہ اداروں کو فوری عملدرآمد کرانا ان کے فرائض منصبی میں شامل ہے پنجاب کے تمام تعلیمی اداروں خصوصاً بہائو الدین زکریا یونیورسٹی ملتان میں ہمارے صوبے کے طلباء کے لئے مخصوص سیٹیں دوبارہ بحال کی جائیں ملک کے اہم اور اعلیٰ تعلیمی اداروں میں اوپن میرٹ پر صوبے کے طلباء کو دوبارہ مفت داخلے دئیے جائیں ، تمام سرکاری اور پرائیوٹ تعلیمی اداروں میں پشتون بلوچ طلباء کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے اور انہیں امتیازی سلوک کا نشانہ بنانیکا سلسلہ فوری طو رپر بند کیا جائے اس وقت صوبے کے جو طلباء سندھ اور پنجاب کی اعلیٰ جامعات میں زیر تعلیم ہیں انہیں مختلف مسائل کا سامنا ہے ان مسائل کے حل کے لئے نہ تو سندھ اور پنجاب کی صوبائی حکومتیں موثر کردار ادا کررہی ہیں او رنہ ہی وفاقی حکومت نے اب تک کوئی مثبت کردار ادا کیا ہے بلکہ الٹا اپنے مسائل کے حل کے لئے آواز اٹھانے والے پشتون اور بلوچ طلبہ کو امتیازی سلوک کا نشانہ بنایا جاتا ہے اور آئے روز ان کے ساتھ پرتشدد واقعات بھی پیش آتے ہیں جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔ انہوں نے پشتون سٹوڈنٹس کونسل کے چارٹر آف ڈیمانڈ کی مکمل حمایت کرتے ہوئے یقین دہانی کرائی کہ پارٹی ان کے مسائل کے حل کے لئے ہر فورم پر اپنافعال کردارادا کرے گی اور طلبہ کو درپیش مسائل کے حل کو یقینی بنایا جائے گا۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More