The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

عمان کا بحرین کے اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کرنے کے سہ فریقی اعلامیے کا خیرمقدم … امید ہے کچھ عرب ممالک کی حکمت عملی سے نیا راستہ فلسطینی زمینوں پر اسرائیلی قبضے کے … مزید

33

مسقط (اردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 ستمبر 2020ء) سلطنت عمان نے بحرین کے اسرائیل کے ساتھ بہترتعلقات قائم کرنے کے سہ فریقی اعلامیے کا خیرمقدم کیا ہے، عمان کے سرکاری میڈیا کی جانب سے حکومتی بیان میں کہا گیا ہے کہ سلطنت عمان اس کی بات کی امید ظاہر کرتا ہے کہ کچھ عرب ممالک کی جانب سے جو اسٹریٹجی اپنائی گئی ہے، اس کے ذریعے نیا راستہ فلسطینی زمینوں پر اسرائیلی قبضے کے خاتمے کیلئے مئوثر ثابت ہوگا جبکہ مشرقی یروشلم کے ساتھ دارالحکومت کے طور پر ایک آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کیلئے بھی امن قائم کرنے کا باعث ہوگا۔ واضع رہے کہ اسرائیل کے وزیر انٹیلی جنس نے 13 اگست کو متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے معاہدے کے اعلان کے کچھ دن بعد کہا تھا کہ عمان بھی ان کے ساتھ سفارتی تعلقات کو باضابطہ طور پر تشکیل دے سکتا ہے۔

(جاری ہے)

واضح رہے بحرینی وزیر خارجہ عبداللطیف الزیانی نے عرب ٹی وی سے گفتگو میں کہا کہ بحرین کے اسرائیل کے ساتھ اعلانِ امن سے علاقائی سلامتی اور استحکام کو فروغ ملے گا اور یہ اقوام کے باہمی رواداری اور بقائے باہمی سے رہنے کے پختہ عقیدے کا بھی مظہر ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم شاہ حمد بن عیسی آل خلیفہ کو ان کے دانش مندانہ ویژن پر مبارک باد پیش کرتے ہیں۔انھوں نے بحرین اور اسرائیل کے درمیان امن کے قیام کے لیے دلیرانہ اور تاریخی فیصلہ کیا ۔ ہم بحرین کے معززعوام کو بھی مبارک باد پیش کرتے ہیں جنہوں نے امن کی حمایت کی ہے اور جن کا یہ پختہ عقیدہ ہے کہ امن ہی قوم کے لیے ایک تزویراتی انتخاب ہے۔ان سے جب بحرین کے اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے کے مخالفین کے بارے میں سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ سیاسی معاملات میں یہ ایک فطری سی بات ہے کہ بعض لوگ ایسے فیصلوں کے حامی ہوتے ہیں اور بعض مخالف ہوتے ہیں۔ انہوں نے بحرین کے اس مقف کا اعادہ کیا ہے کہ اس کو اپنی خارجہ پالیسی کے تعین کا خود مختارانہ حق حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایران عرب ممالک کے داخلی امور میں مداخلت کرتا ہے اور ان کی سلامتی کو عدم استحکام سے دوچار کرنا چاہتا ہے۔ وہ دہشت گرد ملیشیاؤں کی حمایت کرتا اور انہیں اسلحہ مہیا کرتا ہے اور وہ دوسرے ممالک کے ساتھ پرامن بقائے باہمی سے نہیں رہنا چاہتا ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More