The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

علامہ شاہ تراب الحق قادریؒاسلاف کی نشانی ، ان کی دینی و ملی خدمات ناقابل فراموش ہیں،علماء اہلسنّت … ْ شاہ صا حب نے پاکستان کا دستور اسلامی رکھنے ، پارلیمنٹ میں توہین رسالت … مزید

3

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 13 ستمبر2020ء) پیر طریقت علامہ سید شاہ تراب الحق قادری رحمة اللہ علیہ ناموراسلاف کی بہترین نشانی ، ان کی دینی و ملی خدمات ناقابل فراموش ہیں۔ شاہ صاحب نے ملک و بیرون ملک دین کی تبلیغ و اشاعت میں اپنی زندگی صرف کی، مذہبی ایوان ، محراب و منبر سے لیکر حکومتی ایوان تک صدائے حق بلند کی۔انہوں نے میمن مسجد مصلح الدین گارڈن جوڑیابازار میں شاہ صاحب کے چوتھے سالانہ عرس کے اجتماع سے اپنے خطاب میں کہاکہ نیک لوگوں کا ذکر ِخیر کرنا گناہوں کا کفاراہ ہوا کرتا ہے ۔ہر انسان کو موت آنی ہے کامیاب شخص وہ ہے جسے مرنے کے بعد لوگ اچھے الفاظ سے یا د کریں ۔ ان کا کہنا تھا کہ اپنے لوگوں کو دور کرنے کے بجائے قریب کرنا ترجیح بنا لیں آپس کے اختلافات بھلا کر حُب ِ رسول کی بنیا د پر متحد ہونا ہو گا۔

(جاری ہے)

اجتما ع میںمولانا ابرار احمد رحمانی نے خطاب میں کہاکہ شاہ صا حب نے بحیثیت ممبر قومی اسمبلی پاکستان کا دستور اسلامی رکھنے ، پارلیمنٹ میں توہین رسالت کے قانون 295/C کی منظوری میںکلیدی کردار ادا کیا ۔

آپ علم و استقامت کا سر چشمہ تھے ،سانحہ نشتر پارک دہشت گردوں کی دھمکیوں کے باوجود اسلام اور ملک دشمنوں کے خلاف سیسہ پلائی دیوار بنے رہے۔دیگر مقررین نے علامہ شاہ تراب الحق قادری ؒ کی دینی و ملی ، سماجی و سیاسی خدمات کو زبر دست خراج عقیدت پیش کر تے ہوئے کہا کہ ہما ری جدو جہد کا اوّلین مقصد دین مصطفی کی سر بلندی اور ملک ِ پاکستان کا استحکام ہو نا چاہیے، یہی علامہ شاہ تراب الحق قادری کا مشن رہا ۔ شاہ صاحب ایک مثالی عالم دین تھے ان کی کمی شدت سے محسوس کی جا تی رہے گی۔ دین مصطفوی کی صحیح معنوںمیں ترویج و اشاعت کیلئے شاہ تراب الحق جیسے لوگوں کی اشد ضرورت ہے۔ مقررین کا کہنا تھا کہ شاہ صاحب سے محبت کرنے والے دین اسلام اور پاکستان کے استحکام کیلئے اپنی تمام صلاحیتوں کو بر وئے کار لا ئیں ۔اجتما ع میں شیخ الحدیث مفتی اسماعیل ضیائی،حاجی حنیف طیب،علامہ سید عبد الوہاب قادری،علامہ نسیم احمد صدیقی،ڈاکٹر فرید الدین قادری،ڈاکٹر اشرف الجیلانی،علامہ رئیس قادری،علامہ اکرام امصطفی، مولانا انتصار المصطفیٰ،مولانا کامران قادری،مولانا جمیل احمد امینی،عبد الغفار برکاتی، مولانا نذر حسین شاہ، صاحبزادہ صلاح الدین صدیقی،علامہ یونس شاکر ، سید رفیق شاہ، سید شاہ سراج الحق ،سید شاہ فرید الحق،مفتی ناصر خان ترابی،علامہ رئیس قادری،قاضی نو ر الاسلام،غفران احمد،علامہ اشرف شاد،،مفتی بلال ،مولانا عاشق سعیدی، مولانا راشد رضوی،اظہر خان ،قاری سعید احمد قاسمی،ڈاکٹر عبد الرحیم،سید اللہ رکھا،علامہ عرفان ضیائی،مولانا الطاف امجدی،مولانا معراج الدین ،احمد رضا طیب،قاری محمد علی، مولانا محی الدین ،مفتی احمر ،سلیم الدین شیخ کے ساتھ ساتھ مذہبی ،سیاسی ،سماجی شخصیات کے علاوہ مختلف شعبہ ہائے زندگی سے وابستہ افراد خصوصاً شاہ صاحب کے محبین کثیر تعداد میں شریک تھے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More