The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

شہباز فیملی اور دیگر شریک ملزموں کیخلاف منی لانڈرنگ ریفرنس پر مزید کارروائی 29 ستمبر تک ملتوی … شہباز شریف کی صاحبزادی جویریہ کی حاضری سے ایک دن کے استثنیٰ کی درخواست … مزید

5

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 14 ستمبر2020ء) احتساب عدالت نے شہباز فیملی اور دیگر شریک ملزموں کیخلاف منی لانڈرنگ ریفرنس پر مزید کارروائی 29 ستمبر تک ملتوی کر دی، عدالت نے شہباز شریف کی صاحبزادی جویریہ کی حاضری سے ایک دن کے استثنیٰ کی درخواست منظور کر لی جبکہ حمزہ شہباز کو کورونا وائرس کا ٹیسٹ کے باعث عدالت میں پیش نہ کیا گیا ۔ احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے ریفرنس پر سماعت کی ۔ شہباز شریف احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔ نیب حکام کی جانب سے بتایا گیا کہ حمزہ شہباز کو کورونا وائرس کے باعث پیش نہیں کیا گیا۔عدالت کے استفسار پر بتایا گیا کہ حمزہ شہباز کے ٹیسٹ ہوگئے اور رپورٹس کا انتظار ہے۔شہباز شریف فیملی کے وکیل امجد پرویز نے استدعا کی کہ ابتدائی مرحلہ میں حاضری سے استثنیٰ دیاجائے ۔

(جاری ہے)

عدالت نے باور کرایا کہ قانون کے مطابق شریک ملزموں کو پیش ہونا ہے۔ عدالت میں شہبازشریف کی بیٹی جویریہ کی مستقل حاضری معافی کی درخواست پر وکلا ء بحث کرنا تھی تاہم نیب پراسکیوٹرنے کہا کہ ہفتے کو درخواست دائر کی گئی ہے اس پرآئندہ بحث کریں گے جس پر عدالت نے جویریہ کی ایک دن کی حاضری معافی کی درخواست قبول کر لی ۔دوران سماعت شہباز شریف نے کہا کہ میں اپنے متعلق لاہور ہائیکورٹ کا حکم لایا ہوں ، میرے خاندان پر یہ سیاسی مقدمہ بنایا گیا ہے۔ عدالت نے کہا کہ تمام بیانات کے بعد بیان ریکارڈ ہو گا، تب آپ کچھ بھی کہہ سکتے ہیں۔ جس پر شہباز شریف نے کہا کہ جو آپ حکم کریں گے، ۔ عدالت نے کہا کہ حکم نہیں قانون کی بات ہے۔عدالت نے سماعت 29ستمبر تک ملتوی کرتے ہوئے شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز اور بیٹی رابعہ عمران کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دئیے ،عدالت نے شہباز شریف کے داماد ہارون یوسف کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے گرفتار کر کے عدالت پیش کرنے کا حکم دیدیا جبکہ عدالت نے سلمان شہباز کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری برقرار رکھنے کاحکم دیدیا ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More