The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل کی فصلوں کا ڈیٹا جمع کرنے کے نظام کوسائنسی بنیادوں پراستوارکرنے کی ہدایت

10

بدھ ستمبر
17:18

ملتان ۔16 ستمبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 16 ستمبر2020ء) سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل نے کہا ہے کہ شعبہ کراپ رپورٹنگ سروس کو پرفارمنس میں بہتری لانے کی ضرورت ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جنوبی پنجاب میں خریف کی فصلوں کے زیر کاشت رقبہ اور پیداوار کے تخمینہ بارے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے ہدایت کی کہ فصلوں کا ڈیٹا اکٹھا کرنے کے نظام کو سائنسی بنیادوں پر استوار کریں کیونکہ زراعت کی پوری پلاننگ کراپ رپورٹنگ کے اعداد و شمار پر منحصر ہے۔ اگر اعداد و شمار ہی غلط ہوں تو منصوبہ بندی اور نتائج میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جنوبی پنجاب کی خریف کی پانچ اہم فصلوں کپاس، دھان، کماد، مکئی، اور آم کا گزشتہ دس سالوں کی کاشت اور پیداوار کا صحیح تخمینہ پیش کیا جائے تاکہ 2010-11 سے 2019-20 تک ان پانچ فصلوں کے کاشتہ رقبے اور پیداوار میں کمی و بیشی کا موازنہ کیا جاسکے۔

(جاری ہے)

انہوں نے ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ ڈویژن کی سطح پر اعداد و شمار تیار کرکے پیش کیے جائیں تاکہ تینوں ڈویژنز میں ان فصلوں کے رجحانات کے بارے میں معلومات حاصل ہوسکیں۔ انہوں نے ہدایت کی کہ ہر لحاظ سے مکمل اعداد و شمار گراف کی صورت میں دکھائے جائیں تاکہ دیکھنے، سمجھنے اور پیش کرنے میں آسانی ہو۔ انہوں نے مزید کہا کہ مختلف فصلوں کے رقبہ میں اضافہ اور کمی کی وجوہات سے بھی آگاہ کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ آم کے باغات کے اعداد و شمار نہایت غیر تسلی بخش ہیں انہیں دوبارہ جانچ پڑتال اور تصدیق کرکے پیش کیا جائے۔ انہوں نے مزید ہدایت کی کہ ڈی جی خان ڈویژن میں آم کی پیداوار میں بتدریج کمی واقع ہورہی ہے۔ گزشتہ تین سالوں کے دوران آم کی فی ایکڑ پیداوار میں کمی کی ٹھوس وجوہات تفصیلاً پیش کریں۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More