The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

سپریم کورٹ ، دہشت گردی میں ملوث ملزمان کی سزا میں کمی سے متعلق دائر اپیلوں پر سماعت 2 ہفتوں کیلئے ملتوی

7

منگل ستمبر
17:19

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 15 ستمبر2020ء) سپریم کورٹ نے دہشت گردی میں ملوث ملزمان کی سزا میں کمی سے متعلق دائر اپیلوں پر سماعت 2 ہفتوں کیلئے ملتوی کر دی ہے۔ عدالت عظمیٰ نے فساد فی الارض پر اسلامی دانشور سے معاونت طلب کر لی ہے ، سپریم کورٹ نے قرار دیا ہے کہ اسلامی دانشور فساد فی الارض سے متعلق عدالت کی معاونت کرے۔ منگل کو جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے دہشتگردی میں ملوث ملزمان کی سزا میں کمی سے متعلق دائر اپیلوں پر سماعت کی۔ سماعت کے دوران جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیئے کہ 2006ء میں قانون میں ترمیم کی گئی جس کے بعد سزا میں کمی کو ختم کر دیا گیا، 2006ء سے پہلے والے ملزمان کو تو سزا میں کمی کا حق ملنا چاہئے، جو لوگ ہنر سیکھ کر یا پڑھ کر اچھا انسان بننا چاہتے ان کو تو موقع دینا چاہئے، اگر ایسے ملزمان کو معاف نہ کیا جائے تو پھر وہ پکے دہشت گرد بن جائیں گے۔

(جاری ہے)

سماعت کے دوران ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے دلائل دئیے کہ دہشت گردی میں ملوث افراد کو رعایت نہیں دی جاسکتی،اگر دہشت گردوں کو معاف کر دیا تو فساد فی الارض کا خطرہ ہے،اسلام بھی فساد فی الارض سے روکتا ہے، حق اور رعایت میں فرق ہوتا ہے، دہشت گردی میں ملوث افراد کو رعایت کا کوئی حق نہیں ،ریاست کی صوابدید ہے کہ وہ کسی ملزم کی سزا میں کمی کرے۔ سماعت کے دوران جسٹس مشیر عالم نے ریمارکس دئیے کہ ہمیں فساد فی الارض سمیت مختلف معاملات پر معاونت چاہئے۔ عدالت عظمیٰ نے کیس کی سماعت 2 ہفتوں تک ملتوی کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ اسلامی دانشور فساد فی الارض سے متعلق عدالت کی معاونت کرے۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More