The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

سرگودھا کی ادبی کہکشاں میں انور گوئندی مرحوم نمایاں اہمیت کے حامل ہیں، ڈاکٹر ہارون الرشید تبسم

10

پیر ستمبر
17:05

سرگودھا (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 14 ستمبر2020ء) معروف دانشور پروفیسر(ر)میجر ڈاکٹر ہارون الرشید تبسم نے کہا ہے کہ سرگودھا کی ادبی کہکشاں میں انور گوئندی مرحوم نمایاں اہمیت کے حامل ہیں جو ادبی تحریک کی حیثیت رکھتے تھے، ان کے ذکر کے بغیر سرگودھا کی ادبی تاریخ نامکمل تصور کی جائے گی ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ریڈیو پاکستان سرگودھا کے پروگرام “ادب نامہ”میں اپنے صدارتی خطاب میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ انور گوئندی نے رسالہ”کامران”کے ذریعے بہت سے لکھاریوں کو ادبی دنیا میں متعارف کروایا اور بیشمار شاعروں اور ادیبوں کی صلاحیتوں کو پروان چڑھایا۔انہوں نے سرگودھا میں” کامران مشاعرہ” کی بنیاد ڈالی اور اُسے بام ِعروج تک پہنچایا۔پروگرام کے مہمان ِخصوصی اور ممتاز شاعر و ادیب ممتاز عارف نے کہا کہ انور گوئندی ایک ادبی تحریک تھے،وہ مردم شناس بھی تھے اور کردار ساز بھی تھے۔

(جاری ہے)

انہوں نے نئے لکھنے والوں کی تربیت میں اہم کردار ادا کیا۔انہوںنے مزید کہا کہ سرگودہا میں مشاعرہ کی دم توڑتی روایت کو زندہ رکھنے کے لیے سنجیدگی سے غور کیا جائے۔ پروگرام کا دوسرا حصہ محفلِ مشاعرہ پرمشتمل تھاجس میں پروگرام کی میزبان منزہ انور گوئندی،ارشد محمودارشی،مرتضی حسن شیرازی،ذوالفقار احسن،ڈاکٹر شفیق آ صف ، ممتا زعارف اورپروفیسر (ر)میجرڈاکٹر ہارون الرشید تبسم نے اپنا کلام پیش کیا۔یاد رہے کہ یہ پروگرام انور گوئندی کی یاد میں خصوصی طور پر پیش کیا گیا جن کی 11ستمبر کو برسی تھی۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More