The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

سخت سزائوں کے ساتھ ساتھ فحاشی اور بے حیائی کی روک تھام بھی ضروری ہے، … علماء کو بے راہ روی کی روک تھام کے لئے حکومت کی کوششوں کا ساتھ دینا چاہیے ، علی محمد خان

2

علماء کو بے راہ روی کی روک تھام کے لئے حکومت کی کوششوں کا ساتھ دینا چاہیے ، علی محمد خان

بدھ ستمبر
15:30

سخت سزائوں کے ساتھ ساتھ فحاشی اور بے حیائی کی روک تھام بھی ضروری ہے،
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 16 ستمبر2020ء) وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے کہا ہے کہ سخت سزائوں کے نفاذ کے ساتھ ساتھ فحاشی اور بے حیائی کی روک تھام بھی ضروری ہے، علماء کو بے راہ روی کی روک تھام کے لئے حکومت کی کوششوں کا ساتھ دینا چاہیے۔ بدھ کو ایوان بالا میں وقفہ سوالات کے دوران جہانزیب جمالدینی کے سوال کے جواب میں وزیر پارلیمانی امور علی محمد خان نے کہا کہ مجرموں کو سر عام سزا کا حامی ہوں لیکن صرف سزائوں سے ہی بہتری نہیں آئے گی، پولیس اور انصاف کے نظام میں بہتری لانے کی ضرورت ہے۔ چیئرمین نے کہا کہ نظام کو بہتر بنانے کے لئے سٹڈیز یا سروے کرائیں۔

(جاری ہے)

علی محمد خان نے کہا کہ سائنٹفک طریقے اختیار کرنے اور قانون کو سیاسی وابستگیوں سے بالاتر ہو کر بہتر بنانا ہو گا، کوئی بھی حکومت علماء کے تعاون کے بغیر معاشرے کو بہترنہیں بنا سکتی، وزیراعظم اسلامی سزائوں کی بات بار بار کر رہے ہیں، ہم یہ سمجھتے ہیں کہ سزائیں اسلام کے مطابق سخت سے سخت ہوں، فحاشی کی روک تھام بھی ضروری ہے، پیمرا ڈراموں میں فحاشی اور بے حیائی کے خلاف اقدامات کر رہا ہے، حکومت بے راہ روی کی روک تھام کی خواہاں ہے، منبر و مسجد کو بھی حکومت کی ان کوششوں میں ساتھ دینا چاہیے، حکومت بچوں کی ایسی تربیت چاہتی ہے جیسا ریاست مدینہ میں اہتمام کیا جاتا تھا۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More