The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

ریسکیوسروس کے انسانیت کی خدمت کے 16سال مکمل، یوم تاسیس کی پروقارتقریب

13

لاہور۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 17 اکتوبر2020ء) : پنجاب ایمرجنسی سروس (ریسکیو1122)کے سولہویں یوم تاسیس کی پروقار تقریب ایمرجنسی سروسزاکیڈمی میں منعقد ہوئی جس کے مہمان خصوصی اسپیکر صو با ئی اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی تھے۔ تقریب میں بانی ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹررضوان نصیراور ہراول دستے کے ریسکیورزوافسران کے علاوہ ڈویثرنل ایمرجنسی افسران،ریسکیو ہیڈکوآرٹرزوایمرجنسی سروسز اکیڈمی کے سینئر افسران وانسٹرکٹرز اورریسکیورز کی بڑی تعدادنے شرکت کی۔اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سپیکر اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی نے کہاکہ ان کے لیے یہ اعزاز کی بات ہے کہ یہ خدمت کرنے والی سروس ان کے دورِ حکومت میں شروع ہوئی اور آج پنجاب بھر میں اس اہم اور مثالی ایمرجنسی سروس کی وجہ سے دکھی انسانیت کی خدمت بلا امتیاز رنگ و نسل کی جارہی ہے، ریسکیو 1122کے بنانے کا خیال اور اس کے معرض وجود میں آنے کے بعد اس ادارے کی اہمیت کو کوئی بھی نظر انداز نہ کر سکا ،اس کے جامع اورمربوط نظام کی وجہ سے اسے پنجاب کے باقی علاقوں تک بھی پھیلا دیا گیا۔

(جاری ہے)

انہوں نے بانی ڈائریکٹر جنرل اور ہراول دستے کے ریسکیورزوافسران کو زبردست خراج تحسین پیش کیاجن کی دن رات کی محنت، مقصد سے سچی لگن نے اس سروس کو نہ صرف پنجاب بلکہ دوسرے صوبوں کے لئے ایک ماڈل بنا دیا، اسی سروس کی تکنیکی اور تربیتی معاونت کی بدولت خیبر پختونخواہ اور گلگت بلتستان میں سروس کا قیام ممکن ہو سکا۔ انہو ں نے کہا کہ ان کے لیے یہ بات انتہائی خوشی کا باعث ہے کہ ریسکیو 1122 کا پودا جو لاہور کے اندر لگایا گیا تھا اب وہ ایک تنا آور درخت بن چکا ہے جس سے پورے پنجاب اور اس کے ساتھ ساتھ دوسرے لوگوں کو بھی فائدہ پہنچ رہا ہے۔ انہو ں نے کہا کہ وہ تمام ریسکیورز کو یقین دلاتے ہیں کہ وہ جذبے اور ایمانداری کے ساتھ اپنی ذمہ داری کو پوری کرتے رہیں ،وہ یسکیور کا ہر حال میں خیال رکھیں گے اور ان کے مسائل کا بہترین حل تلاش کریں گے تاکہ وہ سکون و اطمینان کے ساتھ اس سروس میں لوگوں کی خدمت کر سکیں۔ اس کے علاوہ انہوں نے اس بات کا بھی یقین دلایا کہ ریسکیورز کی سروس سٹرکچر کا دیرینہ مطالبہ ہنگامی بنیادوں پر حل کیا جائے گا ، اس سلسلے میںوزیر اعلی پنجاب پہلے ہی ریسکیورز کے مسائل کو حل کرنے کی یقین دہانی کروا چکے ہیں۔ قبل ازیں خطبہ استقبالیہ دیتے ہوئے ڈاکٹر رضوان نصیر نے کہا کہ پنجاب ایمرجنسی سروس نے 2004میں بطورپائلٹ پراچیکٹ ایمرجنسی ایمبولینس سروس کاآغاز کیا ،پہلے سے موجود ایمرجنسی سروسز کو بار ہا بہتر اور جدید خطوط پر استوار کرنے کی ناکام کوششوں کے پیش نظر سب لوگ یہ سمجھتے تھے کہ پاکستان میں اس طرح کی ایمرجنسی سروس کی کامیابی نا ممکن ہے،چنانچہ سروس کا قیام ایک بڑا چیلنج تھاخصوصا اس وقت جب کہ پاکستان میں کوئی بھی تربیت یافتہ شخص یا تربیتی ادارہ موجودنہ تھا حتیٰ کہ ٹیچنگ ہسپتالوں کے ایمرجنسی ڈیپارٹمنٹس میں بھی تربیت یافتہ عملہ موجود نہ تھا۔انہوں نے کہا کہ تمام مشکلات کے باوجود سروس کے قیام کو درپیش چیلنجز کا سامنا کیا جس میں اہلکاروں کی بھرتی اوران کی جدید خطوط پر تربیت،ریسکیو اسٹیشنز کے لیے مناسب جگہ کا حصول، ریسکیو اسٹیشن کا قیام، پاکستان میں عالمی معیار کی ایمبولینس، فائر اور ریسکیو وہیکلز کی تیاری، ٹول فری ہیلپ لائن 1122نمبر اور وائرلیس فریکوئنسیز،موثر نگرانی کے حصول کے لیے وہیکلز کی ٹریکنگ اور کنٹرول رومز میں کالز مانیٹرنگ سسٹم کا قیام شامل ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ وقت نے یہ ثابت کر دیا کہ یہ پراجیکٹ (ریسکیو1122)معیاری تربیت،اعلیٰ دیکھ بھال، پیشہ وارانہ مہارت اور بروقت ریسپانس کے حوالے سے مثالی ہے ،اسی وجہ سے اس سروس کو پنجاب کے تمام اضلاع میں پہنچا دیا گیا اور بہت جلد پنجاب کے دور دراز کے تمام علاقوں میں یہ سروس موجود ہو گی۔ ڈی جی ریسکیوپنجاب نے اپنے اختتامی کلمات میں کہا کہ 16سال قبل جو صرف خیال تھا وہ اب حقیقت میں تبدیل ہو چکا ہے جو کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے موثرنظام، بروقت حادثات پر ریسپانس اور ان کی روک تھام کے لیے کام کر رہا ہے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ بے شک کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے ایک عالمی معیار کی سروس موجود ہے۔ انہو ں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ محفوظ معاشرے کے قیام کے لیے ٹریفک حادثات اور آگ کے واقعات جن کی تعدادمیں خطر ناک حدتک اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے ان حادثات کی روک تھام کے لیے مختلف اداروں اور سول سوسائٹی کے ساتھ باہمی اشراک سے کام کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے سپیکر پنجاب اسمبلی سے درخواست کہ وہ ریسکیورز کے پرموشن کے حوالے سے زیر التوا معاملات کو پنجاب ایمرجنسی کونسل سے منظور کروانے میں موجودہ گورنمنٹ سے درخواست کریں تاکہ ریسکیورز کی پرموشن وقت کے ساتھ ساتھ ممکن ہو سکے۔ تقریب کے آخر میں بانی ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹررضوان نصیر کے ہمراہ ابتدائی بیج کے افران نے سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الٰہی کو یادگار تصویر پیش کی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More