The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

[ ریجنل زرعی تحقیقاتی ادارہ بہاولپور میں آئل سیڈ سائنٹسٹ کی اسامی ایک سال سے خالی ، کسی آئل سیڈ کراپ پر کوئی کام نہیں ہو رہا

15

اتوار اکتوبر
23:05

(بہاول پور( آن لائن) ریجنل زرعی تحقیقاتی ادارہ بہاولپور میں آئل سیڈ سائنٹسٹ کی اسامی ایک سال سے خالی ہونے کی وجہ سے کسی آئل سیڈ کراپ پر کوئی کام نہیں ہو رہا۔ذرائع کے مطابق بہاولپور میں رایا، سرسوں، تِل، کینولہ، سورج مکھی، کسنبہ، اور تارا میرا کی فصلیں کاشت کی جا سکتی ہیں مگرحکومتی توجہ نہ ہونے کی وجہ سے آئل سیڈ کی کئی فصلوں کا بیج ہی نہیں ملتا۔

(جاری ہے)

زرعی ماہرین کے مطابق بہاولپور رایا، سرسوں، تِل، کینولہ، سورج مکھی، کسنبہ، اور تارا میرا کی فصلوں کے لیے انتہائی مناسب آب و ہوا کا حامل ہیء مگر حکومت کی ردم توجہی کے باعث اب تک ان فصلوں کی کاشت پر کوئی کام نہیں ہو سکا ۔ماہرین کے مطابق پاکستان سالانہ 300 ارب سے زائد کا خوردنی تیل باہر سے منگواتا ہے۔ اور اگر حکومت بہاولپور میں رایا، سرسوں، تِل، کینولہ، سورج مکھی، کسنبہ، اور تارا میرا کی فصلوں کے لیے کاشتکاروں کو سہولت فراہم کرئے تو خوردنی تیل منگوانے پر جو کثیر رقم خرچ کی جاتی ہے اس میں خاطر خواہ کمی لاکر زرمبادلہ بچایا جاستا ہے ۔ڈائریکٹر زرعی تحقیقاتی ادارہ بہاولپورنے اس حولے سے کہا ہے کہ حکومت کو آئل سیڈ سائنٹسٹ آسامی پر تعیناتی کے لیے لکھا ہوا ہے۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More