The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

حکومت کیلئے آئی ایم ایف کا گلے میں ڈالے غلامی کے طوق نے ملک کے معاشی مستقبل پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے، مو لانا عبد الحق ہا شمی … غریبوں کو کوئی ریلیف نہیں مل رہا،سود ختم … مزید

11

غریبوں کو کوئی ریلیف نہیں مل رہا،سود ختم کرنے کے بجائے شرح بڑھاکر صنعت سازی اور گھریلو دستکاریوں کو بند کیا جارہا ہے ، امیر جماعت اسلامی بلوچستان

پیر ستمبر
21:40

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 14 ستمبر2020ء) جماعت اسلامی کے صوبائی امیر مولانا عبدالحق ہاشمی نے کہاکہ حکومت نے مہنگائی ،بے روز گاری بڑھانے اور آئی ایم ایف کی غلامی کا طوق گلے میں ڈالنے کا جو رویہ اختیار کر رکھا ہے اس نے ملک کے معاشی مستقبل پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے ۔بلوچستان کو حکومت کی منفی رویہ منتخب صوبائی حکومتوں کے غلط اقدامات وکرپشن نے بہت متاثرکیا ہے حکومت سے زندگی کے ہر طبقہ کے لوگ تنگ اور پریشان ہیں ۔آئی ایم ایف کے ملازمین کو وزارتیں واعلیٰ عہدے دیکر معیشت ٹھیک کروانا خام خیالی ہے ۔بلوچستان کے مسائل کا حل دیانت دار عوام سے مخلص صالح حکمران ہیں جبکہ اب تک بلوچستان کے عوام کو صرف وعدوں ،بے عمل اعلانات پر ٹرخایا جارہا ہے جس سے احساس محرومی ونئے مسائل نے جنم لیا ہے جماعت اسلامی صوبے کے مسائل حل کر سکتی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ اب تو پی ٹی آئی کے سرپرست جو بڑی توقعات سے انہیں اقتدار میں لائے تھے وہ بھی مایوس ہوچکے ہیں۔

حکومت کب تک کہتی رہے گی کہ موجودہ بدترین حالات کی ذمہ داری سابق حکمرانوں پر ہے۔ ملک کو قرضوں کے دلدل میں مزید پھنسا کربین الاقوامی سودی اداروں ورلڈ بنک آئی ایم ایف کے حوالے کر دیا گیا ہے ملک میں بڑھتی ہوئی بدامنی پر قابو پانے میں ناکا م ہوچکی ہے ۔حکمران اپنی کارکردگی بہتربنانے کے بجائے غریب کی کمائی سے حکومت چلانے کا خواب دیکھ رہے ہیں۔ مدینے کی ریاست کا نام لینے والے شراب کی بندش اور سود کے خاتمہ نہیں ہونے دے رہے ۔ حج کی سبسڈی پر پیسے نہیں ہیں لیکن سینما گھروںکے لئے کئی ارب روپے نکل آتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یوٹیلیٹی سٹورز بند پڑے ہیں اور غریبوں کو کہیں سے کوئی ریلیف نہیں مل رہا۔سود ختم کرنے کے بجائے اس کی شرح بڑھاکر صنعت سازی اور گھریلو دستکاریوں کو بند کیا جارہا ہے ۔. انہوں نے کہا کہ ہم سب کو اپنے مالک سے ڈرنا اور خالق و مخلوق کے ساتھ کئے ہوئے وعدوں کا پاس کرنا چاہیے اور ایک نئے عزم کے ساتھ پاکستان بنانے کے اصل مقصد کی طرف پلٹنا چاہیے۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More