The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

’حالات سیاستدانوں کے ہاتھوں سے نکل رہے ہیں ، ان کے پاس زیادہ وقت نہیں‘ … جنہوں نے ایف اے ٹی ایف بل منظور کرانا تھا ، انہوں نے کروا لیا ، عارف حمید بھٹی

4

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 ستمبر2020ء) حکومت اور اپوزیشن اس وقت اپنی بقا کی جنگ لڑ رہے ہیں ، اس جنگ میں دونوں اپنی بازی ہار رہے ہیں ، اور حالات سیاستدانوں کے ہاتھوں سے نکلتے جارہے ہیں ، اب ان کے پاس زیادہ وقت نہیں ہے ، انہیں سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا چاہیئے ، جنہوں نے ایف اے ٹی ایف بل منظور کرانا تھا ، انہوں نے کروا لیا ، مجھے بل منظور ہونے پر کوئی تعجب نہیں ، ان خیالات کا اظہار تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے کیا ۔ نجی ٹی وی پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چیئرمین سینیٹ کے خلاف عدم اعتماد آیا تھا اور جب وہ کھڑے ہوئے توگنتی میں 64 لوگ تھے لیکن جب ڈبوں سے نکلے تو 50 رہ گئے ، اسی طرح اس بل کو بھی منظور ہونا تھا ، کچھ لوگوں نے سیاست چمکانی تھی ، تقرریں کرنی تھیں ، اور جب یہ گھر سے آئے تھے انہیں تب بھی پتہ تھا کہ بل منظور ہونا ہے اور ہماری موجودگی میں ہی ہونا ہے ، لہذا بل منظور ہونے پر کوئی تعجب نہیں جنہوں نے منظور کرانا تھا انہوں نے کرا لیا ۔

(جاری ہے)

عارف حمید بھٹی نے کہا کہ آپ نے دکانوں پر فار سیل کے بورڈ دیکھے ہوں گے اور جب سے یہ حکومت آئی ہےمیں نے تو ہر دکان میں بورڈ دیکھے ہیں، سیل، سیل، لوٹ سیل ۔
واضح رہے کہ اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت ہونے والے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں اینٹی منی لانڈرنگ اور ا سلام آباد وقف املاک بل سمیت پانچ بلز کے حق میں دو سو اور مخالفت میں ایک سو نوے ووٹ پڑے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اجلاس میں اینٹی منی لانڈرنگ ترمیمی بل 2020 کثرت رائے سے منظور کرلیا ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق انسداددہشتگردی تیسراترمیمی بل 2020 بھی کثرت رائے سے منظور ہوگیا ۔ مشترکہ اجلاس میں اسلام آباد وقف املاک بل 2020، سروے اینڈمیپنگ ترمیمی بل 2020، اسلام آبادہائی کورٹ ترمیمی بل کثرت رائے سے منظور کرلیا گیا۔مشیرپارلیمانی اموربابراعوان نے بلز ایوان میں پیش کیے ، مشترکہ اجلاس کے دوران پاکستان میڈیکل کمیشن ایکٹ میں ترمیم کا بل 2020 ایوان میں پیش کیا گیا۔ایف اے ٹی ایف سے متعلق اہم قانون سازی سمیت دیگر بلز بھی مشرکہ اجلاس کے ایجنڈے کا حصہ تھے ۔ اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت ہونے والے مشترکہ اجلاس میں وزیراعظم عمران خان، قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور چیئرمین پیپلز پارٹی سمیت حکومتی اور اپوزیشن کے ارکان اسمبلی موجود تھے ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More