The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

جمہوری نظام کے ذریعے عوام اقتصادی اور سیاسی نظام میں حصہ لے سکتے ہیں،سپیکروڈپٹی سپیکر … جمہوریت میں ملک کی خاطر سیاسی اختلافات سے بالاتر ہو کر باہمی مشاورت سے فیصلے … مزید

7

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – آن لائن۔ 15 ستمبر2020ء) سپیکر و ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی نے عالمی یوم جمہوریت کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ امن کا قیام، انسانی حقوق کی فراہمی اور ملک کی ترقی جمہوریت سے وابستہ ہے،ملک کی تعمیر و ترقی کے لیے جمہوری اداروں کا استحکام ناگزیر ہے، جمہوریت آزادیِ رائے کے اظہار سمیت تمام بنیادی حقوق کی فراہمی کی ضمانت دیتی ہے۔سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ جمہوری نظام کے ذریعے عوام ملک کے اقتصادی اور سیاسی نظام میں حصہ لے سکتے ہیں۔ جمہوریت میں ملک کی خاطر سیاسی اختلافات سے بالاتر ہو کر باہمی مشاورت سے فیصلے کیے جاتے ہیں۔ سیاسی جماعتوں کو قومی مفادات کی خاطر اپنے سیاسی وابستگیوں سے بالاتر ہو کر سوچنے کی ضرورت ہے۔

(جاری ہے)

عوامی مسائل کو حل کرنے کے لیے عوامی نمائندوں کو اجتماعی سوچ اپنانا ہو گی۔

جمہوریت کا حسن ہے کہ ملک کو درپیش مسائل کا حل باہمی گفت وشنید اور بات چیت سے نکالا جائے۔ ہمارا مذہب بھی باہمی مشاورت کی ضرورت پر زور دیتا ہے۔جمہوری اقدار کو فروغ دے کر ملک کو ایک ترقی یافتہ ممالک کی صف میں کھڑا کر سکتے ہیں۔ بھارت جو دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہونے کا دعویٰدار ہے نے اپنے ہی شہریوں کے حقوق صلب کر رکھے ہیں۔ گزشتہ 72سالوں سے بھارت کشمیر عوام کو ان کا حق خودارادیت دینے سے انکاری ہے۔ جس کا وعدہ کشمیری عوام سے اقوام متحدہ کے سلامتی کونسل کی قراردادوں کے تحت کیا گیا تھا۔ گزشتہ ایک سال سے زیادہ عرصے سے بھارت کی فاشسٹ حکومت نے مقبوضہ وادی میں گورنر راج نافذ کر رکھا ہے۔ بھارت نے گورنر راج کے ذریعے مقبوضہ کشمیر میں فوجی محاصرہ کر رکھا ہے۔ مقبوضہ جموں کشمیر کے عوام تمام جمہوری اور بنیادی حقوق محروم ہیں۔ جمہوریت پسند اقوام کو کشمیری عوام کو ان کا حق خودارادیت دلانے میں کردار دار کرنے ضرورت ہے۔ڈپٹی سپیکر قاسم خان سوری نے جمہوریت عام آدمی کو ملکی معاملات میں حصہ شرکت کا موقع فراہم کرتی ہے۔ ملک کی ترقی اور سلامتی جمہوریت کے مضبوطی اور تسلسل جمہوری اداروں کے استحکام سے منسلک ہے۔ پاکستان میں جمہوریت کے تسلسل سے ملک مضبوط ہو رہا ہے۔ تمام سیاسی جماعتیں ملک کو درپیش چیلینجز سے نمٹنے کے لیے اپنا کردار ادا کر رہی ہیں۔ ماضی میں جمہوریت کا بار بار تسلسل ٹوٹنے کی وجہ ملکی ادارے کمزور ہوئے۔ جمہوریت کے تسلسل سے ادارے مضبوط ہونگے اور ملک آگے بڑھے گا۔ اقوام متحدہ کو کشمیری عوام کو ان کا بنیادی جمہوری حق دلانے کے لیے سلامتی کونسل کی قراردادوں پر عملدرآمد کرانے کی ضرورت ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More