The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

تحریک فتح مصالحتی مذاکرات میں کسی بیرونی دبائو کو قبول نہ کرے،حماس … امریکا اور اس کے حواری مل کر قضیہ فلسطین کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں، مرکزی رہ نما خالد الحاج

17

امریکا اور اس کے حواری مل کر قضیہ فلسطین کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں، مرکزی رہ نما خالد الحاج

اتوار اکتوبر
14:30

جنین (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 18 اکتوبر2020ء) اسلامی تحریک مزاحمت حماس نے تحریک فتح پر زور دیا ہے کہ وہ قومی مفاہمتی
مذاکرات کے معاملے میں کسی قسم کا دبائو قبول قبول کرنے سے انکار کر دے اور مصالحتی عمل کو آگے بڑھانے کے لیے سنجیدگی کا مظاہرہ کرے۔مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق حماس کے مرکزی رہ نما خالد الحاج نے ایک بیان میں کہا کہ ان کی جماعت تحریک فتح کے ساتھ مذاکرات کا عمل آگے بڑھانے اور ستمبر میں بیروت میں ہونے والی کل جماعتی کانفرنس کے فیصلوں پرعمل درآمد کے لیے تیار ہے۔حماس رہ نما کا کہنا تھا کہ امریکا اور بعض یورپی ممالک کی طرف سے تحریک فتح کی قیادت پر حماس کے ساتھ مصالحتی عمل آگے بڑھانے سے باز رہنے کے لیے دبائو ڈالا جا رہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ فلسطینی قوتوں کو قومی مفاد اپنے پیش نظر رکھنا چاہیے اور کسی دوسرے ملک یا طاقت کی بلیک میلنگ میں آنے کے بجائے مصالحت کا سفر منطقی انجام تک پہنچانا چاہیے۔

(جاری ہے)

خیال رہے کہ گذشتہ روز حماس کے سیاسی شعبے کے نائب صدر صالح العاروری نے کہا تھا کہ فلسطینی قومی قوتوں کے درمیان مصالحتی عمل کو بیرونی سازشوں کے ذریعے سبوتاژ کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ تحریک فتح پر بعض عرب ممالک اور امریکا کی طرف سے مصالحتی کوششیں ترک کرنے کے لیے دبائو ڈالا جا رہا ہے۔حماس رہ نما کا کہنا تھا کہ امریکا اور اس کے حواری مل کر قضیہ فلسطین کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں۔ وہ دھمکیوں اور مادی لالچ کا جھانسہ دے کر فلسطینیوں میں پھوٹ ڈالنے اور اسرائیلی ریاست کے مفادات کو آگے بڑھا رہے ہیں

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More