The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

بلوچستان کے بیروزگار نوجوانوں پر ترس کھایا جائے ، وفاقی اداروں میں صوبے کے کوٹے پر عملدرآمد کرائے ، رئوف خان ساسولی … وفاقی اداروں میں صوبے کے کوٹے پر عملدرآمد ،بلوچستان … مزید

10

لسبیلہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 14 ستمبر2020ء) جمہوری وطن پارٹی کے سابق مرکزی سیکرٹری جنرل و بلوچ بزرگ سیاسی رہنماء رئوف خان ساسولی نے کہا ہے کہ وزیر اعظم پاکستان بلوچستان کے بیروزگار نوجوانوں پر ترس کھائیں وفاقی اداروں میں صوبے کے کوٹے پر عملدرآمد کرائیں اور بلوچستان کے ملازمتوں کے کوٹے پر جعلی ڈومیسائل سے ملازمتیں کرنے والوں کو فارغ کیا جائے ،NHAکی ناقص کارکردگی نے حب کے عوام کو عذاب میں مبتلا کردیا ہے حادثات اور انسانی جانیں ضائع ہونے واقعات معمول بن گئے حب کی صنعتوں میں چائلڈ لیبروں سے کام لینے کا سلسلہ بند کیا جائے اور مقامی لوگوں کو ترجیجی بنیادوں پر روزگار فراہم کیا جائے ان خیالات کا اظہار انھوں نے گزشتہ روز حب میں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی رئوف خان ساسولی نے کہا کہ حکومت بلوچستان کی جانب سے معلوم ہو اہے کہ وزیر اعظم بلوچستان کی ترقی وخوشحالی میں بھر پور دلچسپی رکھتے لیکن وزیر اعظم سے گزارش ہے کہ وہ بلوچستان کے بیروزگار نوجوانوں پر ترس کھائیں وفاقی اداروں میں بلوچستان کے کوٹے کے ملازمتوں پر عمل درآمد کرائیں اور جعلی ڈومیسائل پر بلوچستان کے کوٹے پر نوکرنے والوں کو فوری فارغ کر کے انکی جگہ پر بلوچستان کے بیروزگار نوجوانوں کو ملازمتیں دیں اور انہیں وفاقی اداروں میں ملازمتوں پر ترجیح دیں ساسولی نے کہاکہ کسٹم ،FIAاور گیس کمپنیوں و PSOمیں بلوچستان کے لوگوں کو نہ ملازمتیں دی جارہی ہیں اور نہ ہی انہیں بورڈ آف کمیٹی کا ممبر منتخب کیا جاتا ہے مگر ہر وزیر کینڈا سے اپنے من پسند منشایا کمائو لے آتے ہیں اور شاہد خاقان نے ایک لاہوری شیخ کو رکھا اور دیگر نے کینڈین رکھے ہوئے ہیں انھوں نے کہاکہ وفاقی اداروں میں کے بورڈ آف ممبر کمیٹی میں بلوچستان سے نمائندگی ہے کہ اور نہ ہی یہاں کے نوجوانوں کو وفاقی اداروں میں ملازمتوں پر ترجیح دی جارہی ہے اور ملازمت کے دروازے بند کر دیئے گئے ہیں بلوچستان میں اس وقت تر قی وخوشحالی آئے گی جب وفاقی اداروں میں بلوچستان کے لوگوں کو ترجیح دی جائیگی اور ملازمتوں پر انکے کوٹے پر عملدرآمد کرایا جائیگا ساسولی نے مزید کہاکہ حب شہر اس وقت منجھدڑو کا منظر پیش کر رہا ہے اور آسار قدیمہ بنا ہوا ہے عوام شعوری بیداری کے بجائے زندہ باد اورمردباد کی گروپ بندیوں میں پھنسے ہو ئے ہیں انھوں نے کہاکہ رکن قومی اسمبلی محمد اسلم بھوتانی نے حب شہر کے وسط سے گزرنے والی شاہراہ کی حالت زار کے بہتری کیلئے کچھ فنڈز کی منظوری کروائی جبکہ NHAکی ناقص منصوبہ کے باعث آئے روز حادثات ہورہے ہیں اور قیمتی انسانی جانیں ضائع ہو رہے ہیں اور ان حادثات کا NHAکے خلاف مقدمہ درج ہونا چاہئے NHAکے ذمہ داران ہونے والے حادثات میں بری الزمہ نہیں ہیں انھوں نے مزید کہاکہ حب شہر میں بڑھتی ہوئی آبادی پر نہ تو محکمہ بلدیات سوچ بچار کر رہا ہے اور نہ ہی دیگر ادارے اس جانب توجہ دے رہے ہیں PHE،صحت اور دیگر عوامی سہولیات فراہم کرنے والے ادارے اپنی جگہ مگن ہیں عوام تمام تر سہولیات سے محروم ہیں صنعتوں کے نام پر حاصل ہونے والی اراضیات پر تعمیرات کئے جارہے ہیں جبکہ حب شہر و مضافاتی علاقوں میں بغیر پلاننگ و این اوسی اور نقشے کے بغیر ہائوسنگ اسکیمات بنائے جارہے ہیں اس حوالے سے روک تھام کرنے والا کوئی نہیں ہے جبکہ حب شہر میں بڑھتی ہوئی آبادی کے باعث جہاں پر بیروزگاری کے مسئلے پیدا ہو رہے تو دوسری جانب جرائم کی وارداتوں میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے جبکہ پولیس کی نفری آج سے 30سال پہلے کی ہے اس میں اضافہ نہیں کیا جارہا ہے انھوں کہاکہ صنعتکاروں مل مالکان کو یہاں کے لوگوں کو روزگار کی فراہمی کیلئے آمادہ کرنے ضرورت ہے اور صنعتوں میں غیر قانونی کم اجرت پر مزدور رکھے ہوئے اور چائلڈ لیبر سے کام لیا جارہا ہے چائلڈ لیبر سے مشقت لینے کا سلسلہ فوری بند کیا جائے انھوں نے کہاکہ لسبیلہ چیمبر آف کامرس اور لیڈا اپنی ذمہ داریوں کا احساس کریں ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More