The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

بلوچستان میں کوڈ- 19کے پیش نظر طویل بندش کے بعد تعلیمی ادارے کھل گئے ،ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد

5

منگل ستمبر
14:00

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 15 ستمبر2020ء) بلوچستان میں کوڈ- 19کی پیش نظر طویل بندش کے بعد تعلیمی ادارے کھل گئے ،ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد شروع کردیا ،والدین میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ،تمام سکولوں میں ایس او پیز پر عمل درآمد کے لیے اردو اور انگریزی میں ہدایت نامہ پہنچا دیا گیا ہے،تفصیلات کے مطابق منگل کو ملک بھر کی طرح بلوچستان میں بھی کورونا وائرس کے پیش نظر طویل بندش کے بعد تعلیمی ادارے سخت ایس اوپیز کے ساتھ کھل گئے ،صوبائی حکومت کے فیصلے کے مطابق پہلے مرحلے میں میٹرک،کالجز اور یونیورسٹیوں میں تعلیمی سلسلے کا آغاز کردیا گیا ہے،ایس او پیز کے تحت طلباء کے لیے ماسک پہننا لازمی قرار جبکہ سکولوں میں بریک اور اسمبلی نہیں ہوگی،صوبائی حکومت کی جانب سے سکولوں میں کورونا وائرس ہدایات پر عمل درآمد کو یقینی بنانے اور انہیں مانیٹر کرنے کے لیے ٹیمیں تشکیل دے دی گئیں ہیں ، طلباء کو یہ ہدایت کی گئی ہے کہ وہ گھروں سے نکلتے وقت ماسک پہن کر آئیں اور سماجی فاصلوں اور دیگر ایس اوپیز پر عمل درآمد کریں، اس ضمن میں ایس اوپیز پر عمل درآمد نہ کرنے والے تعلیمی اداروں کو سیل کیا جائے گا،بچوںکو سکول اور کالج پہنچانے والے ڈرائیورحضرات کو بھی تنبہ کی گئی ہے کہ وہ بچوںکو سکولوں اور کالجوں میں پہنچانے کے وقت سماجی فاصلوں کو یقینی بنائیں ۔

(جاری ہے)

اس موقع پر صوبائی دارالحکومت میں والدین نے خصوصی طور پر ’’اے پی پی‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ کوڈ19کے کیسز میں کمی آنے کے بعد حکومت نے تمام تعلیمی اداروں کو کھولنے کا فیصلہ کیا ہے جو خوش آئند امر ہے ،انہوں نے کہا کہ تمام والدین اور طلباء وطالبات کے ساتھ ساتھ اساتذہ کو چاہیے کہ وہ بھی حکومتی ایس اوپیز پر عمل درآمد کو یقینی بنائیں تاکہ کوڈ 19جیسی وبائی مرض دوبارہ نہ پھیل سکے،والدین نے اساتذہ پر زور دیتے ہوئے کہا کہ وہ طلباء وطالبات کے ساتھ زیادہ سے زیادہ محنت کرے تاکہ بچوں کے تعلیمی سال کو کم عرصہ میں نصاب کومکمل کروایا جاسکے۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More