The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

اگر پولیس قبضہ گروپ بن جائے گی تو موٹروے جیسے واقعات ہوتے رہیں گے‘ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ … سوسائٹی کو زندہ رکھنا ہے تو بڑے افسروں کو معاف کرنا چھوڑ دیں،متروکہ وقف … مزید

11

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 16 ستمبر2020ء) لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر پولیس کے قبضہ کے خلاف کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دئیے ہیں کہ اگر پولیس قبضہ گروپ بن جائے گی تو موٹروے جیسے واقعات ہوتے رہیں گے،اگر سوسائٹی کو زندہ رکھنا ہے تو بڑے افسروں کو معاف کرنا چھوڑ دیں۔چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر پولیس کے قبضے کے خلاف کیس کی سماعت کی۔فاضل عدالت نے مختصر سماعت کے بعد ڈی آئی جی ایلیٹ فورس کو متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر قبضے سے روک دیا جبکہ کیس میں انسپکٹر جنرل پولیس انعام غنی کو طلب کرلیا۔درخواست میںآئی جی پولیس سمیت دیگرز کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا گیا کہ متروکہ وقف املاک بورڈ کی 72کینال 6مرلہ اراضی پر ایلیٹ ٹریننگ سنٹر بنایا گیا۔

(جاری ہے)

متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی کے بدلے میں محکمہ پولیس نے 72کینال اراضی دی۔محکمہ پولیس نے قانون پر عمل نہیں کیا۔ڈی آئی جی ایلیٹ فورس اب متبادل اراضی پر بھی قبضہ کررہا ہے ۔استدعا کی کہ عدالت متبادل اراضی پر پولیس کو قبضہ سے روکنے کا حکم جاری کرے۔چیف جسٹس ہائیکورٹ محمد قاسم خان نے دوران سماعت ریمارکس دئیے کیا پولیس اس ملک میں قبضہ گروپ بن گیا اگر پولیس قبضہ گروپ بن جائے گی تو موٹر وے جیسے واقعات ہوتے رہیں گے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More