The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

اوسلو معاہدے کے بعد اسرائیلی فوج نے سوا لاکھ فلسطینیوںکوپابند سلاسل کیا

11

منگل ستمبر
10:55

مقبوضہ بیت المقدس۔ 15ستمبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – اے پی پی۔ 15 ستمبر2020ء) فلسطینی محکمہ امور اسیران کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ 13 ستمبر 1993کے بعد قابض اسرائیلی فوج ، پولیس اور خفیہ اداروں کی کارروائیوں کے دوران کم سے کم ایک لاکھ 25 ہزار فلسطینیوں کو گرفتار کرکے جیلوں میں قید کیا گیا اور انہیں ظلم وبربریت کا نشانہ بنایا گیا۔

(جاری ہے)

محکمہ اسیران کے ترجمان عبدالناصر فروانہ نے بتایا کہ اوسلو معاہدے میں یہ طے کیاگیا تھا کہ اسرائیل بلا جواز فلسطینیوں کو گرفتار کرنے سے باز آئے گا اور حراست میں لیے گئے فلسطینی قیدیوں کو رہا کرے گا مگر اس معاہدے کے باوجود قابض فوج نے نہ صرف زیرحراست فلسطینیوں کو بدستور قید رکھا بلکہ مزید ایک لاکھ 25 ہزار سے زائد فلسطینیوں کو زندانوں میں ڈالا گیا۔حراست میں لیے جانے والے فلسطینیوں کا تعلق تمام شعبہ ہائے زندگی سے ہے۔ ان میں فلسطینی پارلیمنٹ کے منتخب ارکان، سیاسی رہنما، اساتذہ، طلبا اور سول سوسائٹی کے کارکن شامل ہیں۔اس عرصے کے دوران اسرائیلی زندانوں میں غیرانسانی تشدد اور اذیتوں کے نتیجے میں 111 فلسطینی جام شہادت نوش کرچکے ہیں۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More