The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

انٹلیکچوئل جرنلٹس کونسل آف پاکستان کے مرکزی وائس چیئرمین امداد حسین لاشاری کی میزبانی میں صحافیوں سماجی کارکنوں اور سیاسی و مذہبی رہنماؤں کی شرکت، … صحا فیوں کے خلاف … مزید

16

صحا فیوں کے خلاف مقدمات اور انتقامی کاروائیوں کا ٹرینڈ ریاستی ایجنڈا ہے
جس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں، پیر صاحبزادہ احمد عمران نقشبندی
زرد صحافت کے خاتمے اور حقوق انسانی کے لیے صحافتی حلقوں کو جہاد کرنا ہوگا،امن کے قیام،حقوق انسانی کی فراہمی، ملک کی ترقی اور مستحکم جمہوریت کے لئے آزاد صحافت ناگزیر ہے،
ریاست کے چوتھے ستون سے وابستہ افراد کے خلاف انتقامی کارروائیاں اور مقدمات قابل مذمت ہیں صحافیوں کو روزگار و تحفظ فراہم کرنا ریاست کی ذمہ داری ہے،مقررین کا خطاب

منگل ستمبر
19:49

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – آن لائن۔ 15 ستمبر2020ء) صحا فیوں کے خلاف مقدمات اور انتقامی کاروائیوں کا ٹرینڈ ریاستی ایجنڈا ہے جس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں، مکمل آزاد صحافت کے بغیر حقوق انسانی کی تکمیل ممکن نہیں،ملک کی ترقی اور جمہوری اداروں کے استحکام کے لیے صحافیوں کی قربانیاں لازوال ہیں،زرد صحافت کے خاتمے اور حقوق انسانی کے لیے صحافتی حلقوں کو جہاد کرنا ہوگا،امن کے قیام،حقوق انسانی کی فراہمی، ملک کی ترقی اور مستحکم جمہوریت کے لئے آزاد صحافت ناگزیر ہے ان الفاظ کا اعادہ علماء مشائخ فیڈریشن آف پاکستان کے چیئرمین سفیر امن پیر صاحبزادہ احمد عمران نقشبندی مرشدی نے انٹلیکچوئل جرنلٹس کونسل آف پاکستان کے مرکزی وائس چیئرمین امداد حسین لاشاری کی میزبانی میں صحافیوں سماجی کارکنوں اور سیاسی و مذہبی رہنماؤں کے اعزاز میں منعقدہ عشائیے کی تقریب سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا،تقریب کی صدارت سماجی رہنما ائی جے سی او پی کے صدر راجہ عبدالخالق نے کی عشائیے میں ممبر سندھ جوڈیشنل کمیشن ہومن رائٹس جج محمد اسلم شیخ،ڈی ایچ او ڈاکٹر ڈاکٹر این ایم شجرہ،گلوبل ھیومن رائٹس کے صمصام رضوی،سید اویس،اشرف علی کھاوڑ، انور علی بلوچ،کامران شفیع،محمد بلال،حسین محمد سومرو،غلام اکبر ملک،حسین پر مار،محمد حارث،محمد حمزہ عثمان،ظہور ترین،سید ندیم شہزاد سمیت سیاسی سماجی رہنماؤں اور صحافیوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی،تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ ریاست کے چوتھے ستون سے وابستہ افراد کے خلاف انتقامی کارروائیاں اور مقدمات قابل مذمت ہیں صحافیوں کو روزگار و تحفظ فراہم کرنا ریاست کی ذمہ داری ہے انہوں نے کہا کہ خطبہ حجة الوداع حقوق انسانی کا عالمی چارٹر ہے اگر اس عالمی چارٹر پر عمل درآمد کیا جائے تو حقوق انسانی کی پامالیاں نا ممکن ہو جائیں گی،حقوق انسانی کا تحفظ اور اس کے لیے آواز اٹھانا صحافتی حلقوں کی اولین ذمہ داری ہے اگر وہ یہ ذمیداری پوری کرتے ہیں تو ان پر ملک دشمن ، کرپشن، اور انتہا پسندی کے الزامات لگا کر انتقامی کاروائیاںاور جھوٹے مقدمات قائم کئے جاتے ہیں جو أزادی صحافت کے منافی اقدام ہیں جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے ،انہوں نے کہا کہ ملک میں موجودہ فرقہ واریت کی لہر کے خاتمے کے لیے صحافتی حلقے اپنی ذمہ داریاں ادا کرتے ہوئے میدان عمل میں آئیں اور اس آگ کو مزید بڑھنے سے روکنے کے لیے فوری طور پر عملی اقدامات کریں انہوں نے تمام مذہبی و دینی سماجی سیاسی حلقوں سے اپیل کی کہ خدارا پاکستان کا قیام اتحاد امت کا ثمرہ ہے اسے سبوتاژ کرنے سے گریز کریں اور اپنی صفوں میں اتحاد امت کے لئے برداشت اور درگزر کا ماحول پیدا کرتے ہوئے اتحاد بین المسلمین کو قائم و دائم رکھیں اسی میں ہم سب کی اور ملک و قوم کی ترقی اور استحکام امن اور خوشحالی مضمر ہے۔

(جاری ہے)

تقریب میں ممبر سندھ جوڈیشنل کمیشن ہومن رائٹس جج محمد اسلم شیخ نے حقوق انسانی پر لکھی گئی کتاب مہمانوں کو پیش کی،

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More