The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

امریکہ صدراتی انتخابات: صدر ٹرمپ کے حامیوں کی موٹر بوٹس ریلی … صدر ٹرمپ کے حامیوں کی ان کی دوبارہ جیت کے لیے نکالی گئی موٹر بوٹس ریلی دنیا بھر کی توجہ کا مرکز بن گئی

34

واشنگٹن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 ستمبر2020ء) امریکی صدر ٹرمپ کے حامیوں کی موٹر بوٹس ریلی۔ صدر ٹرمپ کے حامیوں کی ان کی دوبارہ جیت کے لیے نکالی گئی موٹر بوٹس ریلی دنیا بھر کی توجہ کا مرکز بن گئی۔ تفصیلات کے مطابق امریکہ میں صدرتی انتخابات کی آمد پر صدر ٹرمپ کے حامیوں نے ان کی دوبارہ جیت کے لیے موٹر بوٹس پر ریلی نکالی۔ نجی ٹی وی کے مطابق امریکہ میں 3 نومبر کو ہونے والے انتخابات کی تیاریاں عروج پر ہیں اور اس وقت ہر شخص اپنے پسندیدہ امیدوار کی حمایت میں کھڑا ہے، یہی وجہ ہے کہ صدر ٹرمپ کے حامیوں نے ان کے حق میں ریلی نکالنے کا ایک انوکھا انداز اپناتے ہوئے سمندری پانی پر موٹر بوٹس پر ریلی نکالی۔

حامیوں کا کہنا تھا کہ ٹرمپ کو مزید 4 سالوں کے لیے صدارت کا موقع ملنا چاہیے کیونکہ انہوں نے عوام کی بات کی اور اپنے وعدوں پر عمل در آمد کیا۔

(جاری ہے)

ریلی میں ہزاروں شہری شریک ہوئے۔ امریکی صدارتی انتخابات کے پیش نظر جہاں امیدواروں کے حق میں عوامی ریلیاں نکل رہی ہیں وہاں امیدوار بھی اپنے اپنے حریفوں پر خوب طعنہ زن ہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق صدر
ٹرمپ نے ایک بیان میں کہا کہ وہ ریاست نیواڈا میں اپنے مدمقابل جو بائیڈن کی برتری ختم کر دیں گے۔ عوامی جائزوں کے مطابق ڈیمو کریٹک امیدوار جو بائیڈن کو نیواڈا میں ٹرمپ کے مقابلے میں برتری حاصل ہے۔ جبکہ جوبائیڈن بھی ٹرمپپ کو تاریخی شکست دینے کے لیے پر امید دکھائی دے رہے ہیں۔ علاوہ ازیں صدر ٹرمپ نے ایک بار پھر اس عزم کا اظہار کیا کہ امریکہ بہت جلد کرونا وبا سے بچا کے لیے ویکسین تیار کر لے گا۔ ٹرمپ نے ریاست نیواڈا میں اپنے نوے منٹ کے خطاب کے دوران ایک بار پھر ڈیمو کریٹک پارٹی پر تین نومبر کے الیکشن چرانے کا الزام لگایا۔ صدر نے کہا کہ ڈیمو کریٹک پارٹی صرف دھاندلی کے ذریعے ہی الیکشن جیت سکتی ہے۔ انہوں نے ڈاک کے ذریعے ووٹنگ پر تحفظات کو دہراتے ہوئے ڈیموکریٹک پارٹی سے تعلق رکھنے والے مقامی گورنر کو بھی آڑے ہاتھوں لیا۔ صدر ٹرمپ نے کہا کہ ڈیمو کریٹک گورنر اسٹیو سسولک کے ہوتے ہوئے ریاست میں ڈاک کے ذریعے ووٹنگ پر انہیں تحفظات ہیں۔اپنے خطاب کے دوران صدر نے جو بائیڈن کی انتخابی مہم کو بھی سست قرار دیتے ہوئے مجمع سے سوال کیا کہ کیا آپ جانتے ہیں کہ بائیڈن کہاں ہیں۔ وہ اپنے گھر کے تہہ خانے میں ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More