The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

الخلیل میں قابض صہیونی فوجیوں کی فائرنگ سے فلسطینی بچہ زخمی … صیہونی فوج نے فلسطینی لڑکے کو باندھ کر اسے ایک فوجی جیپ میںڈال کر نامعلوم مقام کی طرف لے گئے،ذرائع

21

صیہونی فوج نے فلسطینی لڑکے کو باندھ کر اسے ایک فوجی جیپ میںڈال کر نامعلوم مقام کی طرف لے گئے،ذرائع

اتوار اکتوبر
14:30

الخلیل (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 18 اکتوبر2020ء) فلسطین کی وزارت صحت نے اعلان کیا ہے کہ الخلیل کے باب الزاویہ کے علاقے میں جھڑپوں کے دوران اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ کے دوران ربڑ کی گولیاں لگنے سے 13 سالہ بچہ اور ایک جوان زخمی ہوگئے۔مغربی کنارے میں واقع الخلیل کے وسط میں واقع باب الزاویہ کے علاقے میں الشہدا سٹریٹ چوکی کے قریب فلسطینی شہریوں اور قابض اسرائیلی فوجیوں کے درمیان جمعہ کی دوپہر جھڑپیں ہوئیں۔میڈیارپورٹس کے مطابق مقامی ذرائع نے کہا کہ صہیونی فوجی باب الزاویہ کے علاقے میں متعدد مکانات کے اوپر چڑھ گئے اور فلسطینی شہریوں پر ربڑ کی گولیاں صوتی بم اور آنسو کے کنستروں سے فائرنگ کی جس سے بچہ اور نوجوان زخمی ہوگئے تھے۔صہیونی فوجیوں نے ایک فلسطینی لڑکے کو باندھ کر اسے ایک فوجی جیپ میں کسی نامعلوم منزل پر لے جانے سے پہلے گرفتار کرلیا۔

(جاری ہے)

ذرائع نے اشارہ کیا کہ فلسطینی نوجوانوں نے ربڑ کے ٹائروں میں آگ لگائی اور اسرائیلی فوجیوں پر پتھرائو اور پیٹرول بم پھینکے۔باب الزویہ اسکوائر الخلیل شہر کے مرکزی مرکز میں واقع ہے اور اس کے چاروں طرف بہت سے فوجی اڈے اور آبادکاری چوکیاں ہیں۔25 سالوں سے ، قابض صہیونی حکام الخلیل شہر کے وسط میں علیحدگی کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں ، جس کا مقصد اسرائیلی آباد کاروں کو ایک بھیڑ بھرے فلسطینی شہر کے مرکز میں رہنے کے قابل بنانا ہے۔الخلیل پچاس سے زیادہ آبادکاری چوکیوں سے گھرا ہوا ہے جہاں قریبا تیس ہزار یہودی آباد کار رہتے ہیں۔قابض صہیونی فوجیوں نے 1948 میں مقبوضہ اراضی سے واپسی کے دوران جینن کے شمال میں واقع مقبل کے قریب دیوار علیحدگی کے اردگرد سے تین فلسطینی کارکنوں کو گرفتار کرلیا۔عینی شاہدین نے اطلاع دی کہ فوجیوں نے تینوں کو گرفتار کرنے سے قبل فلسطینی کارکنوں کے لئے گھات لگا کر حملہ کیا ، اور انہیں نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More