The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

اسلام آبادٹریفک پولیس نے رواں سال بغیرلائسنس کے گاڑی / موٹرسائیکل چلانیوالی7,565ڈرائیورز کیخلاف کارروائی کی … ٹریفک قوانین پر ہر صورت عملدرآمد کرایا جائے، شہریوں سے … مزید

8

ٹریفک قوانین پر ہر صورت عملدرآمد کرایا جائے، شہریوں سے حسن اخلاق سے پیش آئیں، ،کاروائی کا مقصد وقیمتی جانوں کا تحفظ اور روڈ ڈسپلن قائم کرنا ہے،ایس ایس پی ٹریفک فرخ رشید

اتوار ستمبر
18:05

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 13 ستمبر2020ء) اسلام آبادٹریفک پولیس کی بغیرلائسنس کے گاڑی / موٹرسائیکل چلانے والوں کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی جاری ہے،رواں سال میں 7,565ڈرائیورز کے خلاف قانونی کاروائی کی گئی ، ایس ایس پی ٹریفک فرخ رشیدنے کہا ہے کہ ٹریفک قوانین پر ہر صورت عملدرآمد کرایا جائی شہریوں سے حسن اخلاق سے پیش آئیں، بغیر لائسنس کے مرتکب گاڑی/ موٹرسائیکل چلانے والے ڈرائیورز کے خلاف کاروائی کی جا رہی ہے ،تمام زونز انچارج کو خصوصی ہدایات جاری کی گئی ہیں،کاروائی کا مقصد وقیمتی جانوں کا تحفظ اور روڈ ڈسپلن قائم کرنا ہے ۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق شہریوں کے جان ومال کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے اسلام آباد ٹریفک پولیس نے بغیر لائسنس کے مرتکب گاڑی / موٹر سائیکل چلانے والوںکے خلاف خصوصی مہم جاری، بغیر لائسنس کے گاڑی /موٹر سائیکل چلا نے والی7,565 ڈرائیورز کو چالان ٹکٹ جاری کئے گئے ہیں ،جسکا مقصد شہریوںکو ہر ممکن سفری سہولیات فراہم کرناہے ،ایس ایس پی ٹریفک اسلام آباد فرخ رشید ننے تمام روزنز انچارج کوخصوصی ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ شہریوں سے حسن سلوک اور صبر و تحمل سے پیش آئیں،انھوں نے آئی ٹی پی ایجوکیشن ٹیم کے انچارج کو خصوصی ذمہ داری سونپتے ہوئے ہدایات کی کہ شہریوں کو ٹریفک قوانین اور روڈ سیفٹی کے متعلق ہر ممکن آگاہی فراہم کی جائے تاکہ شہری حادثات سے محفوظ رہیں اور روڈ ڈسپلن کو قائم رکھا جا سکے، ایس ایس پی ٹریفک ے شہریوں سے اپیل کی ہے کہ اپنے اور خاندان کے تحفظ کو یقینی بنائیںبغیر لائسنس کے موٹر سائیکل / گاڑی نہ چلانے دیں یہ آپ کی قانونی ذمہ داری اور تحفظ بھی ہے ہماری اولین ترجیح شہریوں کا تحفظ اور قانون پر عملدرآمد کرانا ہے ۔

متعلقہ عنوان :

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More