The Pakistan Post
Daily News Publishing Portal

اسلام آباد کے مہنگے ترین سیکٹرزغیرمحفوظ‘امریکی سفارت خانے نے اپنے شہریوں کو انتباہ جاری کردیا … امریکی شہری ایف6‘ایف7‘ایف 10‘ جی6‘آئی9اور آئی 10میں جانے سے گریزکریں. … مزید

9

اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔14 ستمبر ۔2020ء) پاکستان میں امن وامان کی صورتحال پچھلے 30سالوں سے کبھی بھی آئیڈیل نہیں رہی مگر وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کو محفوظ ترین شہر سمجھا جاتا تھا. امریکی سفارت خانے کی جانب سے امریکی شہریوں کے لیے جاری ایک انتباہ نے اسلام آباد پولیس اور انتظامیہ کی کارکردگی کا پول کھول دیا ہے جس کے ذمہ دار سابق فوجی آمرجنرل(ر) پرویزمشرف کے انتہائی قریبی رفیق اور تحریک انصاف حکومت میں وزیرداخلہ بریگیڈیئر(ر)اعجازشاہ ہیں.

(جاری ہے)

2007کے لال مسجد آپریشن کے بعد سے اسلام آباد میں پنجاب رینجرز‘ایف سی اور دیگر پیراملٹری فورسزکے دستے مستقل تعینات ہیں اور عام شہریوں کوروالپنڈی سے اسلام آباد میں داخل ہونے کے لیے سیکورٹی فورسزکی جانب سے انتہائی ہتک آمیزرویئے کا سامنا کرنا پڑتا ہے تاہم امن وامان کی صورتحال کو د یکھا جائے تو وفاقی دارالحکومت کی پولیس اور قانون نافذکرنے والے اداروں کے ہزاروں اہلکار بے بس نظر آتے ہیں . امریکی سفارت خانے کے انتباہ میں اسلام آباد کے مہنگے ترین سیکٹرزایف6‘ایف7‘ایف 10‘ جی6‘آئی9اور آئی 10کے بارے میں امریکی شہریوں کو خبردار کیا گیا ہے کہ وہ ان سیکٹرزمیں غیرضروری طور پر جانے سے گریزکریں اور جو امریکی شہری ان سیکٹرزکے رہائشی ہیں وہ گھروں سے باہر نکلنے میں احتیاط سے کام لیں اور صرف ضرورت کے تحت ہی گھروں سے باہر نکلیں . سفارت خانے نے اپنے انتباہ میں کہا ہے کہ چوری‘ڈکیتی‘راہزنی اور موبائل فون چھینے جانے کے واقعات میں تیزی آئی ہے لہذا امریکی شہری ان سیکٹرزکے کاروباری علاقوں اور مارکیٹس میں بھی جانے سے گریزکریں ‘امریکی شہریوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ”لوپروفائل “میں رہیں‘جیولری پہنچنے اور مہنگی گاڑیوں کے استعمال سے اجتناب کریں‘بنکوں کے اے ٹی ایم استعمال کرتے وقت ہر ممکن حفاظتی اقدامات کو یقینی بنائیں اور اپنے ارگردکی نقل وحرکت سے خبردار رہیں . اسلام میں کام کرنے والے سفارت خانوں کے سیکورٹی امور کے ایک ماہرنے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر ”اردوپوائنٹ“کو بتایا کہ یہ انتہائی شرمناک ہے کیونکہ امریکی سفارت خانے کے اسلام آباد میں بہت سارے سفارت خانوں سے اس طرح کی معلومات کے تبادلے کے معاہدے ہیں اور خط صرف امریکی شہریوں کو ہی نہیں بلکہ امریکی سفارت خانے کی جانب سے ان تمام سفارت خانوں اور ملکوں سے بھی شیئرکیا گیا ہوگا جن کے ساتھ اس کے معلومات کے تبادلے کے معاہدے ہیں . انہوں نے کہا کہ یہ محض چند لائنوں کا ایک انتباہ نہیں بلکہ وزارت داخلہ جوکہ اسلام آباد کی سیکورٹی کی ذمہ دار ہے اور اس کے ذمہ دران کے منہ پر تھپڑہے کہ ہم اتنے نااہل ہیں کہ اسلام آباد جیسے چھوٹے سے شہر کو سیکورٹی فراہم نہیں کرسکتے ‘انہوں نے کہا کہ ایف 6‘ایف7اور ایف10اسلام آباد کے سب مہنگے سیکٹرزہیں جہاں گھروں کا کرایہ لاکھوں روپے ماہانہ ہے اور عام پاکستانی یا غیر ملکی ان سیکٹرزمیں رہنے کا تصور بھی نہیں کرسکتا ان سیکٹرزمیں امن وامان کی صورتحال اس حد تک بگڑچکی ہے کہ غیرملکی سفارت خانے اپنے شہریوں کو ان علاقوں میں نہ جانے کا مشورہ دے رہے ہیں . انہوں نے بتایا کہ” ڈپلومیٹک انکلیوژ“ بننے سے پہلے بیشتربڑے ملکوں کے سفارت خانے ‘ سفیروں اور سنیئراہلکاروں کی رہائش گاہیں ان سیکٹرزمیں ہوتی تھیں اور آج ان علاقوں میں ڈاکوﺅں ‘چوروں اور ڈکیتیوں کا راج ہے جو دن دیہاڑے وارداتیں ڈالنے سے بھی نہیں کتراتے‘انہوں نے کہا کہ یہ محض ایک انتباہی خط نہیں ایٹمی پاکستان کی جنگ ہنسائی ہے پوری دنیا وزیراعظم کم ازکم وزیرداخلہ‘سیکرٹری داخلہ‘مشیرداخلہ‘کمشنروڈپٹی کمشنر اسلام آباد اور پولیس کے اعلی حکام کو بدلیں جن کی وجہ سے آج پاکستان کی جگ ہنسائی ہورہی ہے ‘انہوں نے کہا کہ وزیراعظم سرمایہ کاری کی بات کرتے ہیں تو جس ملک کا دارالحکومت اس قدر غیرمحفوظ ہو وہاں سرمایہ کاری کے لیے کون آئے گا؟ . 

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More